فن تعمیر اور ورثے کا تحفظ | ڈپٹی کمشنر سرینگر کا شہر میں مذہبی مقامات دورہ

سری نگر //ڈپٹی کمشنر سری نگر، محمد اعجاز اسد نے بدھ کو شہر کے مختلف علاقوں کا ایک وسیع دورہ کیا تاکہ شناخت شدہ مذہبی مقامات کے اثاثوں کی بحالی، احیاء ، تحفظ اور دیکھ بال میں فن تعمیر اور ورثے کی جگہ کا جائزہ لیا جا سکے۔ انہوںنے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر سری نگر ڈاکٹر سید حنیف بلخی کے ہمراہ حضرت شیخ داؤد ؒ کے آستان بٹہ مالو، رام مندرصفاکدل، سید محمد حسین مازندرانی کی درگاہ، خانقائے سوختہ، منگلیشور بھیرو استھاپن ،براری نمبل باباڈیمب اور گنپت یار حبہ کدل کا دورہ کیا۔ حضرت شیخ داؤد ؒکے آستان میں تزئین و آرائش اور ترقی کے کاموں کی تفصیلات کا معائنہ کرتے ہوئے ڈی سی کو بتایا گیا کہ 91.33 لاکھ روپے کا ڈی پی آر تیار کیا گیا ہے جس میں مختلف تزئین و آرائش کے کام شامل ہیں ۔ڈی سی نے متعلقہ افسران کو ہدایت دی کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ ڈی پی آر میں تمام کاموں کو واضح اثر کے ساتھ انجام دیا جائے جبکہ وادی کشمیر کے فن تعمیر اور ورثے کو برقرار رکھا جائے۔رام مندر صفا کدل میںڈی سی کو بتایا گیا کہ مندر کی ترقی اور بحالی کے لیے مختلف کاموں کے لیے 1.53 کروڑ روپے کا پروجیکٹ تیار کیا گیا ہے ۔ڈی سی کو بتایا گیا کہ منگلیشور بھیرو استھاپن، براڑی نمبل، باباڈیمب کی 71.25 لاکھ روپے کی تخمینہ لاگت سے تزئین و آرائش کی جا رہی ہے جبکہ گنپتیار مندر کی تزئین و آرائش اور ترقی کے لیے 44.58 لاکھ روپے مختص کیے گئے ہیں۔دونوں مندروں میں، ڈپٹی کمشنر نے متعلقہ ایگزیکیوٹنگ ایجنسیوں کو ہدایت کی کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ کشمیر کے فن، ثقافت اور ورثے کو محفوظ رکھنے کے ساتھ ساتھ ایک دلکش شکل دینے کے لیے تمام کاموں کو انجام دیا جائے۔