فنِ تعمیرسکول کے لئے الگ کیمپس قائم کرنے کا منصوبہ

سرینگر// صوبائی کمشنر کشمیر بصیر احمد خان نے کل آفیسران کی ایک میٹنگ میں آرکٹیکچر سکول بمنہ سے جُڑے معاملات کاجائزہ لیا۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ آرکٹیکچر سکول اگرچہ عبدالاحدمیموریل کالج بمنہ میںقائم ہے تاہم سرکار اس سکول کے لئے ایک الگ اورمکمل کیمپس کا قیام عمل میں لانے کا منصوبہ رکھتی ہے۔اس کالج کو وادی کے ایسے طلبأ کی سہولیات کے طور پر دیکھاجارہا ہے۔ جنہیں پہلے بیچلر آف آرکٹیکچر کورسز کے لئے بیرونی ریاستوں کا رُخ کرنا پڑرہا تھا۔اس وقت آرکٹیکچر سکول یونیورسٹی آف کشمیر سے منسلک ہے ،البتہ کونسل آف آرکٹیکچر سکول کی منظوری کے لئے اقدامات کررہا ہے البتہ اس کی ابتدائی تسلیم شدہ حیثیت کو منظوری دی گئی ہے۔ وادی میں یہ اپنی نوعیت کا پہلا سکول ہوگا جہاں طلبأ قدیم ثقافتی اقدارکی تحقیق اورکیپسٹی بلڈنگ سے مستفید ہوں گے ۔سکول انتظامیہ نے میٹنگ میں کہا آرکٹیکچر سکول بمنہ کو مزید جگہ کی ضرورت ہے اورنئی عمارت کی دستیابی تک اضافی جگہ کی فراہمی ناگزیر ہے۔صوبائی کمشنر نے سکول انتظامیہ کو نوگام میںخالی کئے گئے سی یو کے کیمپس یا باغ دلاور کا معائنہ کرنے کی ہدایت دی تاکہ سکول کو بمنہ سے نئی جگہ پر منتقل کیاجاسکے۔صوبائی کمشنر نے ترقیاتی کمشنر سرینگر کو کیمپس کا دورہ کرنے اور سکول سے جُڑے معاملات کاجائزہ لینے کی ہدایت دی تاکہ اس سلسلے میں صوبائی کمشنر کے دفتر میں 10روز کے اندر اندر رپورٹ پیش کرکے آگے کی کارروائی عمل میں لائی جاسکے۔میٹنگ میں ایڈیشنل کمشنرکشمیر،ترقیاتی کمشنرسرینگر ،ڈائریکٹر کالجز،ڈائریکٹر پلاننگ ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کنٹرولر امتحانات ،ڈپٹی رجسٹرار اورفائنانشنل ایڈوائزر کے علاوہ دیگر متعلقہ آفیسران بھی موجود تھے۔