فل انڈسٹریز کا نیا مشروب متعارف

سرینگر//مشروبات کی دنیا میں قدم رکھنے والے معروف کاروباری ادارے”فل انڈسٹریز لمیٹیڈ“ نے بھارت میں پہلی مرتبہ میوہ،توانائی کے مرکب کا جوس متعارف کرایا،جس کے دوران کمپنی نے کہا کہ اس جوس کو تیار کرنے میں مقامی لال پھلوں کا استعمال کیا جائے گا۔ ’فل انڈسٹریز لمیٹیڈ“نے مشروبات کی دنیا میں انقلاب لانے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ کمپنی کی طرف سے تیار کیا”اکیوٹ“ نامی”میوہ،توانائی“ سے لبریز جوس نہ صرف بھارت میں پہلی مرتبہ متعاف کریا گیا ہے بلکہ یہ مرکب دنیا بھر میں مشروبات کی دنیا میں تہلکہ مچاسکتا ہے۔سرینگر میں ایک تقریب کے دوران اکیوٹ نامی جوس کو متعارف کریا گیا۔اس موقعہ پر ’فل انڈسٹرئز لمیٹیڈ“ کے نیو بزنس ڈیولپمنٹ کے ڈائریکٹر سید اویس بخاری کے علاوہ ’فل انڈسٹریز لمیٹیڈ“ کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹرسید جنید الطاف بخاری بھی موجود تھے۔توانائی جوس کو متعارف کراتے ہوئے اویس الطاف نے بتایا کہ ایک سال کی تحقیق کے بعد فرانس کی ایک کمپنی”مونو رچ بیوریج“ کے اشتراک سے پھلوں کی توانائی سے لبریز جوس کو بالآخر تیار کیا گیا،اور اب بازاروں میں اتارا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ جوس دیگر جوسوں سے مختلف ہوگا کیونکہ عام طور پر مشروبات کی دنیا میں یا تو بوتل بند پانی،یا ڈبہ بند جوس کے علاوہ کول ڈرنکس اور کاربو ہائڈرئیڈ والی سافٹ ڈرنکس دستیاب ہے،تاہم”اکیوٹ“ نامی پھلوں کی تونائی سے تیار کیا گیا جوس،پھلوں اور توانائی کا مرکب ہے،جس میں کشمیری سیبوں کے علاوہ،گلاس اور دیگر لال میوہ جات کا استعمال کیا جائے گا۔اویس بخاری نے کہا”ہماری یہ کوشش ہے کہ ہم کشمیر کو کچھ نیا دیں،تاکہ یاں کا وجود اور معیشت مستحکم ہو“۔اس موقعہ پر سید جنید الطاف نے کہا کہ ’فل انڈسٹرئز لمیٹیڈ“ ریاست میں روزگار کے مواقع پیدا کرنا چاہتی ہے۔انہوں نے کہا”ہمارا دماغ عالمی سطح پر چل رہا ہے،اور نظریں بین الاقوامی بازاروں پر ٹکی ہیں،تاہم دل خالص کشمیری ہے“۔ان کا کہنا تھا کہ عنقریب ہی یہ فروٹ انرجیزر،بھارت کی دیگر ریاستوں میںبھی متعارف کرایا جائے گا۔