فلائی اوورپرکام پھر ٹھپ، واجب الاد رقومات کی ادائیگی میں تاخیر کا شاخسانہ

 سرینگر//واجب الاد رقومات میں تاخیرکے خلاف سر ینگر میں زیر تعمیر فلائی اوور میں کام کرر ہے ٹھیکیداروں اور سپلائروںنے مزید کام کاغیر معینہ عرصے تک کیلئے بائیکاٹ کا اعلان کیا جس کے باعث وہاں ہو نے والا معمول کاکا م گذ شتہ دو روز سے ٹھپ پڑا ہے۔ جہانگیر چوک سے رام با غ تک بننے والے فلائی اوور پر کام کرنے والی تعمیراتی ایجنسی’’ سمپلیکس‘‘ کے پاس کام کررہے ٹھیکداروں اور سپلا ئروں کے7 کروڑ روپے کی رقم  بقا یا ہے۔ فلا ئی اوور پر کام کر نے والے کنٹر یکٹرس ایسو سی ایشن اینڈ سپلائرس ایسوسی ایشن کے عہد داروں نے بتایا کہ یہاں کام کررہے سپلائروں اور ٹھکیداروں نے اتوار سے غیر معینہ عرصے تک کیلئے بائیکاٹ کر رکھاہے اور وہ گذ شتہ دو روز سے کام کا بائیکاٹ کیے ہوئے ہیں۔ انہوں نے دھمکی دی کہ اگر جلد از جلد انکی رقم کو واگزار نہیں کیا تو وہ سڑکوں پر احتجا جی مہم چھیڑ دیں گے۔ انہوںنے کہا کہ رقومات کی عدم ادئیگی کی وجہ وہ بنکوں سے لیے گئے قرضے کو واپس کر نے سے قاصر ہیںاور یوں وہ دو طرفہ نقصا ن کے شکار ہو رہے ہیں۔ادھر ڈائر یکٹر اکنا مک ری کنسڑ کشن ایجنسی کے ڈائر یکٹر شوکت احمد نے فلائی اوور پر بند ہوئے کام کا نہ اقرار اور نہیں انکار کرتے ہوئے بتایاکہ ٹھیکیداروں اور سپلائروں کے آ پسی تنا زعے کی وجہ سے کام رکا  پڑاہے جو جلد ہی نپٹایا جا ئے گا۔ ان کا یہ بھی کہناتھا کہ اتوار کے رو ز تعطیل کی وجہ سے کام بند تھااور سوموارکو ٹھیکیداروں کے اسی تنا زعہ کی وجہ سے کام ٹھپ تھا۔(سی این ایس)