فائر بندی برائے فائر بندی کی کوئی حیثیت نہیں

مظفر آباد// متحدہ جہاد کونسل نے کہا ہے کہ سیز فائز کا اعلان واقعی خوش آئند ہوتا اگر اس میں بھارت کی نیک نیتی اور سنجیدگی نظر آتی۔جہاد کونسل کا ایک اعلیٰ سطحی اجلاس سید صلاح الدین کی صدارت میں ہوا۔ اجلاس میں کہا گیا کہ جیسا کہ نام سے ہی واضح ہے کہ مقدس مہینے کے بعد بھارتی فورسز کے ہاتھوں ماردھاڑاور قتل عام کا سلسلہ دوبارہ شروع ہوگا۔ سیز فائز کا اعلان واقعی خوش آئند ہوتا اگر اس میں بھارتی قیادت کی نیک نیتی اور سنجیدگی نظر آتی۔ لیکن سیز فائر برائے سیز فائر کوئی حیثیت اور اہمیت نہیں رکھتا۔ بھارتی قیادت کو چاہئے کہ وہ مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے سنجیدہ رویہ اختیار کرے اور اس کے لئے ضروری ہے کہ وہ جموں و کشمیر کی متنازعہ حیثیت کو تسلیم کرتے ہوئے اقوام متحدہ کی قراردادوں کے عین مطابق یا اُس کی روشنی میں سہ فریقی مذاکرات کا آغاز کرے اور اعتماد سازی کے طور پر جیلوں میں ہزاروں محبوسین کو رہا کرے۔ اجلاس میں کہا گیا کہ بھارتی قیادت کا رمضان سیز فائر اس لحاظ سے ایک بھونڈا مذاق ہے کہ اس میں سیز فائر برائے سیز فائر کی سوچ غالب ہے۔ ایسے غیر سنجیدہ رویے اور نمائشی اقدامات سے وہ خود کو دھوکہ دے سکتے ہیں لیکن نہ کشمیری عوام اور نہ ہی عالمی برادری اس طرح کے اقدامات سے دھوکہ کھا سکتی ہے۔