عید کی خریداری کیلئے صارفین کا سیلاب آمڈ آیا

راجوری//ضلع ہیڈ کوارٹر کے بازار میں عید کی خریداری کیلئے صارفین کا ہجوم اُمڈ آیا جس کی وجہ سے مارکیٹ میں بہت زیادہ رش دیکھنے میں آرہا ہے اور بڑی تعداد میں لوگ عید کے آنے والے تہوار کی خریداری میں مصروف ہیں۔راجوری قصبہ میں، بازار کے علاقوں میں خریداروں کا ہجوم ہے، دوپہر کے اوقات میں خریداری میں لوگوں کے مصروف ہونے کی وجہ سے پیدل چلنا بھی مشکل ہو جاتا ہے ۔ٹریڈ یونین کے صدر راجیش گپتا نے بتایا کہ ’عید کے تہوار سے پہلے کے یہ پانچ دن راجوری قصبے میں خریداری کے تہوار کی طرح ہیں کیونکہ ہزاروں لوگ خاص طور پر دیہات کے لوگ بازار آتے ہیں اور اشیائے ضروریہ کی خریداری کرتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ سب سے زیادہ رش یا تو کریانہ کی دکانوں پر نظر آتا ہے جہاں لوگ کھانا پینے کیلئے راشن ودیگر سامان خریدتے ہیں یا کپڑے کی دکانوں پر جہاں لوگ تہوار پر پہننے کیلئے نئے کپڑے خریدتے ہیں ۔

 

 

 

عید سے قبل بازاروں میں گہماگہمی 

منڈی میں لوگ خریداری میں مصروف

عشرت حسین بٹ

منڈی//عید الفطر سے قبل جہاں تحصیل منڈی کے بازاروں میں کافی گہماگہمی دیکھائی دے رہی ہے اور لوگوں کو عید کی خریداری میں مصروف دیکھا جارہا ہے ۔اگر چہ کوڈ انیس کی وجہ سے گزشتہ دو برسوں سے لوگوں کو عید الفطر منانے میں مشکلات کا سامناکرنا پڑا ہے مگر اس برس عوام نہایت ہی تزک و احتشام کے ساتھ عید الفطر منانے کی تیاریوں میں لگے ہوئے ہیں اور بازاروں سے عید کے لئے خریداری جاری ہے۔ مشتاق احمد نامی ایک شخص نے اس حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ دو برس  کوڈ انیس کی وجہ سے عید الفطر بہتر ڈھنگ سے نہیں منائی گئی جس کی وجہ سے اس سال وہ بہتر طریقے سے عید منانے کی تیاری کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا اب جبکہ عید میں محض دو دن بچے ہیں اس لئے وہ بازار میں خریداری کر رہے ہیں۔ ادھر منڈی کے دوکانداروں نے بھی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دو برس کے بعد ان کی تجارت بھی عید کے موقہ پر بہترین جاری ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ دو برس ماہ صیام کے دوران کوڈ انیس چل رہا تھا جس کی وجہ سے ان کی تجارت کو بھی کافی نقصان پہنچا ان کا کہنا تھا کہ اس برس عید کے موقعہ پر لوگ بازاروں میں آ کر اچھی خریداری کر رہے ہیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ آیندہ دو دنوں کے اند بھی وہ بہتر تجارت کریں گے ۔