’ عید سے قبل تنخوا ہ واگذار کرو‘

سرینگر//ایچ ڈی ایف کے تحت کام کررہے عارضی ملازمین نے جی اے ڈی کے حالیہ سر کیولر کے خلاف زوردار احتجاجی مظاہرئے کرتے ہوئے خبردار کیا کہ اگر عید الضحیٰ تک ان کی تنخوا ہ واگذار نہیں کی گئیں تو اسکے بعد ا یک منظم احتجاجی مہم چھیڑ دیں گے۔ہسپتال ڈیولپمنٹ فنڈ کے تحت کام کرر ہے درجنوں ملازمین جن میں خواتین بھی شامل تھیں ،پرتاپ پارک میں جمع ہو ئیںاور اپنے مطالبات کو لیکر احتجاج کیا۔مظا ہر ین نے احتجاج کرتے ہوئے بتایا کہ وہ ایچ ڈی ایف کے تحت 20برسوں  سے قلیل تنخواہوں پر کام کررہے ہیں۔ انہوںنے کہا کہ جن شفاخانوں میں وہ تعینات ہوئے وہ اب بڑ ے سے بڑ ے اسپتال بن چکے ہیں لیکن ابھی بھی ہماری سروس کو مستقل نہیں بنا یا گیا ہے۔انہوںنے کہا کہ کچھ ما ہ قبل جنر ل ایڈمنسٹر یشن ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے ایک سر کیو لر اجرا کیا گیا جس میںایچ ڈی ایف کے تحت کام کررہے عارضی ملازمین کو نوکریوں سے فارغ کرنے کی بات کئی گئی تھی تاہم بعد میںگو رنر انتظا میہ نے بھی اس سرکیو لر کی بھی نفی کی تھی۔ انہوںنے کہا کہ اس سرکیو لر کے آڑ میں کچھ بلاک اور چیف میڈیکل آ فیسروںنے ہماری تنخوا ہوں کو روک کے رکھا ہے اور ہم دو مہینوں سے تنخواہوں سے محروم ہیں حالانکہ محکمہ صحت کی طرف سے ایسا کوئی حکم جاری نہیںکیا گیا ہے۔ انہوںنے خبردار کیا کہ اگر ہمار ی تنخواہوں کو  عید الضحیٰ کے موقعہ پر واگذار نہیں کیا گیا تو وہ عید کے بعد ایک منظم احتجاجی مہم چھیڑ دیں گے۔اس دوران محکمہ تعلیم میں مشروط ادائیگی(کنٹنجنٹ پیڈ)  پر کام کرنے والے ملازمین نے احتجاج کرتے ہوئے’’کم از کم مشاہراہ‘‘ قانون کو نافذ کرنے کا مطالبہ کیا۔احتجاجی مظاہرین نے محکمہ تعلیم کے خلاف نعرہ بازی کرتے ہوئے کم از کم مشاہرے کے قانون کو لاگو کرنے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے تنخواہوں کو واگذار کرنے کی مانگ کی۔(سی این ایس)