عوام کو بااختیار بنانے میں کھادی بورڈ پیش پیش | گزشتہ مالی سال میں116.80کروڑ مارجن منی فراہم:ڈاکٹر حنا بٹ

{"remix_data":[],"source_tags":[],"origin":"unknown","total_draw_time":0,"total_draw_actions":0,"layers_used":0,"brushes_used":0,"photos_added":0,"total_editor_actions":{},"tools_used":{"transform":1},"is_sticker":false,"edited_since_last_sticker_save":true,"containsFTESticker":false}

عظمیٰ نیوز سروس

سرینگر//کھادی ولیج بورڈ کی چیئرپرسن ڈاکٹر حنا شفیع بٹ نے بدھ کوکشمیر صوبے کے بینکروں کا جائزہ میٹنگ کی۔ میٹنگ میں بورڈ کے سینئر افسران، شریک بینکوں کے افسران اور کھادی بورڈ کشمیر کے ضلعی افسران نے شرکت کی۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ گزشتہ مالی سال کے دوران KVIB نے کشمیر ڈویژن میں 6245 یونٹس کے قیام کیلئے116.80کروڑ روپئے مارجن منی جاری کئے ہیں جس سے 48988 افراد کیلئے روزگار کے مواقع پیدا ہوئے جن میں سے 51 فیصدیونٹس یعنی 3185 یونٹس کی مارجن منی شامل ہے۔ خواتین کاروباریوں نے 59.57 کروڑ روپے قائم کیے ہیں۔ میٹنگ میںبتایا گیا کہ گزشتہ پانچ سالوں کے دوران مارجن منی 418.36 کروڑ روپے کی مارجن منی پروجیکٹ لاگت کے ساتھ فراہم کئے گئے ہیں۔ کشمیر ڈویژن میں 21095 یونٹس کے قیام کیلئے1255.39 کروڑ روپے جاری کیے گئے ہیں اس طرح 168760 افراد کیلئے روزگار کے مواقع پیدا ہوئے ہیں۔چیئرپرسنکے وی آئی بی نے پرائم منسٹرز ایمپلائمنٹ جنریشن پروگرام اور جموں و کشمیر رورل ایمپلائمنٹ جنریشن پروگرام کے کامیاب نفاذ میں حصہ لینے والے بینکوں کے کردار کو سراہا۔ انہوں نے مزید کہا کہ روزگار پیدا کرنے کے یہ پروگرام عوام کو بااختیار بنانے کیلئے بنائے گئے ہیں۔ انہوں نے بینکروں کو مشورہ دیا کہ وہ معمولی بنیادوں پر مقدمات کو مسترد کرنے سے گریز کریں۔انہوں نے بینکروں پر زور دیا کہ خواتین اور سماج کے پسماندہ طبقوں سے تعلق رکھنے والے امیدواروں کے کیسوں پر پوری توجہ دی جائے۔ بینکوں اور ضلعی افسران سے کہا گیا کہ وہ مشن موڈ میں کام کریں تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ اصلاح کے تحت واپس بھیجے گئے دعوے ایک مقررہ وقت میں صاف ہو جائیں۔