عدالت کی حکم عدولی ۔ 7 سینئر افسران کیخلاف ضمانتی وارنٹ جاری

 عظمیٰ نیوز سروس

سرینگر// گاندربل کی ایک عدالت نے کئی اعلیٰ سرکاری افسران کے خلاف قابل ضمانت وارنٹ جاری کیے ہیں کیونکہ وہ عدالتی حکم کی تعمیل کرنے میں ناکام رہے ہیں جس میں اراضی کے حصول کے لیے معاوضے کو لازمی قرار دیا گیا تھا۔ان اعلیٰ افسران میں کمشنر سیکریٹری ریونیو ، کمشنر سیکرٹری آر اینڈ بی ، کلکٹر آف لینڈ ایکوزیشن، ڈپٹی کمشنر گاندربل، تحصیلدار لار، چیف انجینئر آر اینڈ بی اور ایگزیکٹو انجینئر آر اینڈ بی ڈویژن گاندربل شامل ہیں۔یہ مقدمہ ایک طویل قانونی جنگ سے شروع ہوا جس میں نور محمد گوجر چیچی اور غلام حسن گوجر چیچی ساکن لار گاندربل کے رہائشی تھے، جنہوں نے سڑک کی تعمیر کے لیے محکمہ روڈز اینڈبی کی جانب سے مختص کی گئی اپنی زمین کا معاوضہ طلب کیا۔ درخواست گزاروں نے استدلال کیا تھا کہ ان کی زمین مناسب معاوضے کے بغیر لی گئی تھی، جو کہ زمین کے حصول، بحالی اور آباد کاری ایکٹ 2013 میں منصفانہ معاوضے اور شفافیت کے حق کی خلاف ورزی ہے۔ایڈووکیٹ اقبال احمد نے استدلال کیا کہ 31 اکتوبر 2022 کو عدالت کے واضح حکم کے باوجود کوئی کارروائی نہیں ہوئی، جس میں مدعا علیہان کو دو ماہ کے اندر زمین کا تخمینہ لگانے اور معاوضہ دینے کی ہدایت کی گئی تھی۔ ان کا استدلال تھا کہ یہ بے عملی قانون کی حکمرانی اور زمینداروں کے حقوق کی صریح بے توقیری ہے۔دوسری جانب، مدعا علیہان، جن کی نمائندگی اسٹینڈنگ کونسل برجینا نے کی، نے ابتدائی فیصلے کے خلاف دائر اپیل کو تسلیم کیا لیکن کہا کہ اپیل کورٹ سے کوئی سٹے حاصل نہیں کیا گیا تھا۔ انہوں نے دلیل دی کہ اپیل کے عمل نے تعمیل میں تاخیر کا جواز پیش کیا۔ عدالت نے اس بات پر زور دیا گیا کہ محض اپیل دائر کرنا فیصلے پر روک لگانے کے مترادف نہیں ہے۔ آٹھ ماہ سے زائد کا عرصہ گزر جانے کے باوجود،مدعا علیہان عدالت کے حکم کی تعمیل کرنے میں ناکام رہے، جس سے قانونی عمل اور مدعیان کے حقوق کو نقصان پہنچا۔ عدالت نے نوٹ کیا کہ مدعا علیہان اس فیصلے کو غیر اہم سمجھتے ہوئے نظر آئے، جو عدالتی نظام کے لیے پریشان کن نظر انداز کی عکاسی کرتا ہے۔عدالت نے اصل فیصلے کا اعادہ کیا، جس میں مدعیان کو معاوضے کا حقدار قرار دیا گیا اور مدعا علیہان کو ہدایت کی گئی کہ وہ لی گئی زمین کا جائزہ لیں اور اس کے مطابق معاوضے پر کارروائی کریں۔مسلسل عدم تعمیل کو دیکھتے ہوئے، عدالت نے فیصلے کے قرض داروں کے خلاف 50,000 روپے کی ضمانت کے ساتھ قابل ضمانت وارنٹ جاری کرنے کا حکم دیا۔اگلی سماعت 9 جولائی 2024 کو مقرر ہے، اس وقت تک تعمیل متوقع ہے۔