عام آدمی پارٹی سے جموں و کشمیر میں بی جے پی سے کوئی خطرہ نہیں: رینہ

  جموں// جموں و کشمیر بی جے پی کے صدر رویندر رینہ نے ہفتہ کے روز کہا کہ مرکز کے زیر انتظام علاقے کے سیاسی نقشے پر عام آدمی پارٹی کے ابھرنے سے بی جے پی کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔رینہ نے پارٹی ہیڈکوارٹر میں کچھ ڈاکٹروں سمیت کئی ممتاز لوگوں کے استقبال کے لیے منعقدہ ایک تقریب میں نامہ نگاروں کو بتایا"ہمارے پاس ایک مضبوط بنیاد ہے اور ہم اپنے چیف منسٹر کے ساتھ اگلی حکومت بنانے کے لیے تیار ہیں"۔عام آدمی پارٹی  ممبران کی بڑھتی ہوئی تعداد کے بارے میں پوچھے جانے پررینہ نے کہا کہ "بی جے پی دنیا کی سب سے بڑی سیاسی جماعت ہے، جس کے جموں و کشمیر میں 18 لاکھ ممبران ہیں"۔ان کا کہناتھا"ہمارے پاس دو ممبران پارلیمنٹ اور عوامی نمائندے ڈی ڈی سی، بی ڈی سی، میونسپل کونسلرز، سرپنچوں اور پنچوں کی شکل میں ہیں۔بی جے پی ہر گھر میں موجود ہے"۔ جب میڈیا رپورٹس کے بارے میں پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ کئی سابق وزراء اور قانون سازوں کے ساتھ ساتھ 100 افراد بھی شامل ہیں۔ آنے والے دنوں میں پنچایتی ممبران AAP میں شامل ہونے کا امکان ہے۔بی جے پی لیڈر نے کہا کہ انہوں نے حال ہی میں جموں و کشمیر کے مختلف حصوں کا دورہ کیا اور لوگوں میں پارٹی کے لیے جوش و خروش دیکھا۔رینہ نے کہا کہ لوگ وزیر اعظم نریندر مودی کے کام کاج سے خوش ہیں اور "ہم اگلے اسمبلی انتخابات میں کلین سویپ کرنے جا رہے ہیں تاکہ جموں و کشمیر میں اپنے وزیر اعلیٰ کے ساتھ نئی حکومت بنائیں"۔انہوں نے دعویٰ کیا کہ پارٹی 50 سے زیادہ اسمبلی سیٹوں کا ہدف حاصل کرے گی اور کسی دوسری پارٹی سے حمایت لینے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔قبل ازیں رینہ نے سابق نائب وزیر اعلیٰ کویندر گپتا اور سابق وزیر پریا سیٹھی کے ساتھ ڈاکٹروں سمن ابرول اور سبھاش ابرول سمیت نئے آنے والوں کا پارٹی میں خیرمقدم کیا۔