عالمی یوم ارض2022

سرینگر// شیر کشمیر یونیورسٹی آف کشمیر ایگریکلچر سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی نے جمعہ کو ورلڈ ارتھ ڈے2022 کی مناسبت سے فیکلٹی آف ایگریکلچر واڈورا میں ایک تقریب کا انعقاد کیا۔ہر سال 22 اپریل کو عالمی یوم ارض منایا جاتا ہے جس کا مقصد کرہ ارض اور اس کی حیاتیاتی تنوع کو محفوظ کرنا ہے۔ اس سال اس دن کا تھیم ’ہمارے سیارے میں سرمایہ کاری‘ تھا جس کا مقصد افراد، کاروباری اداروں اور عالمی رہنماؤں کو سرمایہ کاری کرنے اور سبز ٹیکنالوجیز اور طریقوں کی طرف جانے کی ترغیب دینا تھا۔ارتھ ڈے کی تقریب کا انعقاد یونیورسٹی کے نیچر اینڈ ایڈونچر کلب، فیکلٹی آف ایگریکلچر، واڈورا کے ذریعے ICAR-ورلڈ بینک کی مالی اعانت سے چلنے والے نیشنل ایگریکلچرل ہائر ایجوکیشن پروجیکٹ (NAHEP) کے تحت SKUAST-K کی ادارہ جاتی ترقی کے لیے کیا گیا تھا، تاکہ اس کی پائیدار شرکت کا عہد کیا جا سکے۔ ڈین فیکلٹی آف ایگریکلچر، پروفیسر ریحانہ حبیب کانتھ نے اپنے افتتاحی خطاب میں کہا کہ یہ دن آلودگی، حیاتیاتی تنوع کے نقصان، جنگلات کی کٹائی، اور ماحول کے گرتے معیار جیسے مسائل پر اربوں افراد کو جوڑنے اور ان پر تبادلہ خیال کرنے کا موقع ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ تمام اسٹیک ہولڈرز کو موسمیاتی تبدیلی کے خطرے کو کم کرنے اور آنے والی نسلوں کے لیے ایک بہتر سیارے کی تشکیل کے لیے مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔چیف ایگریکلچرل افسر بارہمولہ یادویندر سنگھ ساسن، جو اس موقع پر مہمان خصوصی تھے، نے ایک سرسبز اور صاف ستھرے ملک کے لیے جموں و کشمیر حکومت کی جانب سے کیے گئے اہم اقدامات کو بیان کیا۔ ڈاکٹر ظہور اے بٹ، سی ایچ او بارہمولہ نے ہر انسان پر زور دیا کہ وہ جنگلات، جانوروں کی بے دریغ تباہی اور دنیا بھر میں آبی ذخائر، ہوا، مٹی کی آلودگی کے خلاف مادر دھرتی کے تحفظ اور تحفظ کے مقاصد کو برقرار رکھے جس کے نتیجے میں آب و ہوا میں اضافہ ہو رہا ہے۔ اس تقریب کو شجر کاری مہم، تقریری، پینٹنگ اور فوٹو گرافی کے مقابلے منعقد کرکے منایا گیا۔ تقریب کے دوران منعقدہ مقابلوں میں جیتنے والوں کو ڈین نے اسناد اور انعامات سے نوازا۔