عالمی بھلائی کیلئے ساتھ چلنے کا وقت جنگ کی وجہ سے اعتماد کے خسارے پر فتح حاصل کر سکتے ہیں: مودی

عظمی نیوز سروس

نئی دہلی//یوکرین جنگ پر گہری تقسیم کے درمیان، وزیر اعظم نریندر مودی نے ہفتہ کو عالمی رہنماں پر زور دیا کہ وہ عالمی اعتماد کے خسارے کو ایک دوسرے پر اعتماد میں بدلیں اور پرانے چیلنجوں کے نئے حل تلاش کریں۔جی 20 لیڈرز سمٹ میں اپنے ابتدائی کلمات میں مودی نے اعتماد کا اظہار کیا اور کہا کہ اگر دنیا کووڈ کو شکست دے سکتی ہے تو وہ جنگ کی وجہ سے ہونے والے اعتماد کے خسارے پر بھی فتح حاصل کر سکتی ہے۔امریکی صدر جو بائیڈن، سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان، برطانیہ کے وزیر اعظم رشی سنک اور برازیل کے صدر لوئیز اناسیو لولا دا سلوا سمیت دیگر نے جی 20 لیڈروں کے سربراہی اجلاس کے ‘ون ارتھ’ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا، “یہ وقت ہے کہ ہم سب عالمی بھلائی کے لیے مل کر چلیں” ۔مودی نے منڈپم کنونشن سینٹر میں اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا، کووڈ وبائی مرض کے بعد، دنیا کو اعتماد کی کمی کے ایک نئے چیلنج کا سامنا کرنا پڑا اور بدقسمتی سے جنگوں نے اسے مزید گہرا کر دیا ہے۔”لیکن ہمیں یاد رکھنا چاہیے کہ اگر ہم کووڈ جیسی وبائی بیماری کو شکست دے سکتے ہیں، تو ہم اس اعتماد کی کمی کے چیلنج کو بھی جیت سکتے ہیں۔مودی نے کہاکہ آج، G20 کے صدر کے طور پر، ہندوستان پوری دنیا سے اس عالمی اعتماد کی کمی کو اعتماد اور اعتماد میں بدلنے کا مطالبہ کرتا ہے۔مودی نے کہا”یہ وہ وقت ہے، جب پرانے چیلنجز ہم سے نئے حل طلب کر رہے ہیں،اس لیے، انسان پر مبنی نقطہ نظر کے ساتھ، ہمیں اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرنے کے لیے آگے بڑھنا ہوگا” ۔وزیر اعظم نے اجتماع کو بتایا کہ یہ ہندوستان میں لوگوں کا جی 20 بن گیا ہے جس میں 60 سے زیادہ شہروں میں 200 سے زیادہ تقریبات منعقد کی گئیں۔مودی نے کہا”تمام چیلنجوں کے لیے، عالمی معیشت میں ہلچل سے لے کر شمال-جنوب کی تقسیم تک، خوراک کے انتظام سے لے کر ایندھن اور کھاد کے انتظام تک، دہشت گردی سے سائبر سیکورٹی تک، صحت سے لے کر توانائی اور پانی کی حفاظت تک، ہمیں آگے بڑھنا ہوگا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی G20 صدارت ملک کے اندر اور باہر شمولیت اور اتحاد کی علامت بن گئی ہے۔”یہ ہندوستان میں لوگوں کا جی 20 بن گیا ہے۔ مودی نے کہا کہ کروڑوں ہندوستانی اس میں شامل ہوئے، ملک کے 60 سے زیادہ شہروں میں 200 سے زیادہ میٹنگیں ہوئیں۔

 

 

انڈیا مشرقی وسطیٰ راہداری
سعودی عرب کا شامل ہونیکا اعلان
عظمی نیوز سروس

نئی دہلی //ایک تاریخی اعلان میں سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان نے سمٹ سربراہی اجلاس کے دوران کہا کہ انکے ملک نے امریکہ، یورپی یونین مڈ ایسٹ انڈیا ریل اور شپنگ کوریڈور پر مفاہمت نامہ پر دستخط کئے ہیں،جس میں انڈیا بھی شامل ہے۔انہوں نے کہا کہ انکا ملک اس منصوبے میں 20ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گا۔یہ منصوبہ اس وقت سامنے آیا ہے جب چین پورے خطے میں اثر و رسوخ بڑھا رہا ہے۔امریکہ کا کہنا ہے کہ یہ صرف ایک بنیادی ڈھانچے کا منصوبہ نہیں ہے۔امریکہ نے ہندوستان، مشرق وسطی کے ممالک اور یورپی یونین کے ساتھ ایک معاہدے پر دستخط کیے جس کا مقصد انہیں ریلوے اور سمندری راستوں کے نیٹ ورک کے ذریعے جوڑنا ہے، یہ ایک ایسی ترقی ہے جب چین توانائی سے مالا مال خطے میں اپنا اثر و رسوخ بڑھا رہا ہے۔امریکہ جنوری سے بھارت، سعودی عرب، متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے ساتھ اس منصوبے پر خاموشی سے بات چیت کر رہا ہے۔ یہ منصوبہ مشرق وسطی کے ممالک کو ریل کے ذریعے اور ہندوستان سے خطے کی بندرگاہوں سے شپنگ لین کے ذریعے جوڑنا ہے، جو مشرقی یورپ تک پھیلا ہوا ہے۔

 

 

سمٹ کے اعلامیہ پر اتفاق
تاریخ رقم: مودی
عظمیٰ نیوز سروس

نئی دہلی//G20 رہنمائوں نے ہفتہ کو اپنے سربراہی اجلاس میں ایک اعلامیہ اپناتے ہوئے، وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ تاریخ رقم ہو گئی ہے اور بلاک کے ممبران کی حمایت اور تعاون کے لیے ان کا شکریہ ادا کیا ہے۔مودی نے X پر کہا”نئی دہلی میں سمٹ قائدین کے اعلامیہ کو اپنانے کے ساتھ تاریخ رقم ہوئی ہے،اتفاق اور جذبے کے ساتھ متحد، ہم ایک بہتر، زیادہ خوشحال اور ہم آہنگ مستقبل کے لیے باہمی تعاون سے کام کرنے کا عہد کرتے ہیں، کانفرنس کے تمام ساتھی ممبران کی حمایت اور تعاون کے لیے میں ان کا شکریہ ادا کرتا ہوں‘‘۔لیڈرز سمٹ کے دوسرے سیشن کے آغاز میں، وزیر اعظم مودی نے نئی دہلی لیڈرز کے اعلامیہ کو اپنانے کا اعلان کیا، جو کہ ہندوستان کی G20 صدارت کے لیے ایک اہم فتح ہے جو یوکرین کے تنازعہ پر بڑھتی ہوئی کشیدگی اور مختلف خیالات کے درمیان سامنے آئی ہے۔

 

 

اندھیرے فٹ پاتھ روشن

۔6لاکھ پھولوں کے گملے لگائے گئے
عظمیٰ نیوز ڈیسک

نئی دہلی//نئی دہلی کے اندھیرے فٹ پاتھوں پر سٹریٹ لائٹس روشن ہیں۔ شہر کی عمارتوں اور دیواروں کو پینٹ کیا گیا ہے۔ پھول ہر جگہ دکھائی دے رہے ہیں۔ نئی دہلی کو چمکانے کی وسیع کوشش کیلئے120 ڈالرملین کا ایک “بیوٹیفیکیشن پروجیکٹ بنایا گیا تھا۔ راجدھانی میں مختلف محکموں کی جانب سے ان علاقوں میں قریب 6لاکھ گملے لگائے گئے ہیں جہاں جہاں سے مہمانوں کا گذر ہوگا۔اسکے علاوہ فٹ پاتھوں کی خالی جگہوں میں پھول لگائے گئے ہیں۔کچھ ایسے نئے فٹ پاتھ بنائے گئے ہیں جن کے اوپر سرخ رنگ کی عارضی چھتیں بنائی گئی ہیں۔دلی کی دیواروں پر ملک کی کثیر جہتی ثقافت اور تمدن کی عکاسی کی گئی ہے۔

 

۔6اقسام کی 1200روشنیاں نصب
۔600درختوں، مجسموں اور فواروں کو سجایا گیا
نئی دہلی //عالمی سمٹ کے موقعہ پرنئی دلی کو جاذب نظر بنانے کیلئے ائر پورٹ سے لیکر کانفرنس کی جگہ اور دلی کی سبھی اونچی عمارتوں، پلوں اور فٹ پاتھوں کو برقی قمقموں سے سجایا گیا ہے۔راجدھانی کے اس مخصوص حصے میں 6اقسام کے 1200روشنی کے پینل نصب کئے گئے ہیں۔اسکے علاوہ600 درختوں، مجسموں، فواروں اور دیگر چیزوں پر برقی قمقمے لگائے گئے ہیں۔

۔31مجسمے،90فواریں،1.65لاکھ پودے
۔450بینرز اور11فلائی اوور وں کی خوبصورتی
نئی دہلی //جی 20 سمٹ سے قبل دہلی کی میونسپل کارپوریشن کی جانب سے بیوٹیفیکیشن مہم کے ایک حصے کے طور پر کوڑا کرکٹ میٹرئل سے بنے آرٹسٹک مجسمے آٹھ مقامات پر لگائے گئے ہیں۔پرگتی میدان میں 28فٹ لمبا نٹراجہ مجسمہ نصب کیا گیا ہے۔اسکے علاوہ محکمہ تعمیرات عامہ کی سڑکوں پر 31 مجسموں اور 90 فواروں کی تنصیب، 1.65 لاکھ پودے لگانا اور آرائشی روشنی کی تنصیب شامل ہے۔ 23 فلائی اوورز کو خوبصورت بنایا ہے۔ 11فلائی اوور کے نیچے سبزہ لگایا گیا ہے۔خالی جگہوںپر سبزہ ، پھول اور درخت لگائے گئے۔سربراہان مملکت اور دیگر مندوبین کے استقبال کے لیے لال قلعہ، ہمایوں کے مقبرے، لوٹس ٹیمپل اور دہلی کے دیگر مشہور ورثہ مقامات کی تصاویر والے 450 بینرز لگائے ہیں۔