ظلم کے خلاف آواز بلند کرنا واحد راستہ:گیلانی

سرینگر//حریت (گ)چیئرمین سید علی گیلانی نے کہا ہے کہ موجودہ حالات میں کشمیری عوام کیلئے صرف دو ہی راستے ہیں ،ایک ظلم کے خلاف آواز بلند کریں اور دوسرایہاں سے ہجرت کریں لیکن جغرافیائی حالات ہمیں ہجرت کی اجازت نہیں دیتے ہیں، اسلئے ہمارے لئے صرف ایک ہی راستہ بچتا ہے کہ ہم مقابلہ کریں اورظلم کے خلاف آواز اٹھائیں۔ سید علی گیلانی گذشتہ دنوں جاں بحق ہوئے ثاقب احمد آری ہل پلوامہ کی یاد میں منعقدہ ایک تعزیتی مجلس سے ٹیلیفونک خطاب کررہے تھے۔ حریت رہنما نے آزادی حاصل کرنے کے عہد کرتے ہوئے کہا کہ ’’شہداء کا ہم پر بہت بڑا احسان ہے اور ان کے مقدس لہو کو کسی بھی صورت میں رائیگاں ہونے نہیں دیا جائے گا اورنہ ہی ان قربانیوں کے ساتھ کسی کو کھلواڑ کرنے کی اجازت دی جاسکتی ہے‘‘۔ حریت رہنما نے قوم سے اپیل کی کہ وہ اپنے لخت ہائے جگر کے لہو کی تحریم وتکریم کو ملحوظ نظر رکھتے ہوئے مراعات اور مفادات کے عوض بیچ کھانے کی کوششوں کو ناکام بنائیںاور یکسوئی کا مظاہرہ کریں۔ انہوں نے مجوزہ پارلیمانی اور اسمبلی انتخابات کا مکمل بائیکاٹ کرنے کی اپیل دہراتے ہوئے کہا کہ ’کچھ لوگ عوام کے سامنے بجلی، پانی اور سڑک کے نام پر ووٹ حاصل کرتے ہیں اور اقتدار حاصل کرنے کے بعد یہ لوگ بھارت کے جبری قبضے کو مضبوط بنانے کیلئے اپنے ہی لوگوں کا خون بہانے میں کوئی شرم محسوس نہیں کرتے‘۔ انہوں نے قوم کو اسلامی تعلیمات کے مطابق اپنی زندگی گزارنے کی تلقین کی۔