طالبان کا 10صوبائی دارالحکومتوں پر قبضہ

 آرمی چیف برطرف ،وزیرخزانہ فرار، غزنی کا گورنر گرفتار
کابل //طالبان نے کابل سے صرف 150 کلومیٹر کے فاصلے پر افغانستان کے اسٹریٹجک شہر غزنی کا کنٹرول حاصل کرلیا۔یہ شہر ایک ہفتے میں طالبان کے قبضے میں آنے والا 10 واں صوبائی دارالحکومت ہے جو اہم کابل-قندھار شاہراہ کے ساتھ واقع ہے اور دارالحکومت اور جنوب میں طالبان کے گڑھ کے درمیان ایک گیٹ وے کے طور پر کام کرتا ہے۔طالبان کی پیش قدمی کو روکنے میں ناکامی پر افغان صدر اشرف غنی نے آرمی چیف عبدالولی احمد زئی کو برطرف کرکے ان کی جگہ جنرل ہیبت اللہ علی زئی کو نیاآرمی چیف مقرر کردیا ہے۔دریں اثناترجمان وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ طالبان کی افغان سرزمین پر قبضے میں تیزی کے باعث خالد پائندہ نے استعفا دے کر ملک چھوڑ دیا ہے۔صوبہ میدان ورک میں غزنی کے گورنر کو بھی طالبان نے گرفتار کر لیا ہے۔
 

 حکومت کی طالبان کوشراکتِ اقتدار کی پیشکش

دوحہ //افغان حکومت نے طالبان کو اقتدار میں شراکت کی پیشکش کردی ہے۔ قطر میں طالبان سے مذاکرات کرنے والے افغان حکومت کے نمائندوں نے طالبان کو جنگ بند کرنے کے بدلے میں شراکت اقتدار کی پیشکش کر دی ہے۔افغان حکومت نے اس حوالے سے ایک تجویز قطر کو بطور مصالحت کار پیش کر دی ہے۔ تجویز کے مطابق تشدد بند کرنے کے بدلے میں اقتدار میں شریک ہوں گے۔ادھر اقوام متحدہ نے کہا کہ رواں سال کے آغاز سے اب تک افغانستان میں تقریباً 3 لاکھ 90 ہزار افراد نقل مکانی پر مجبور ہو چکے ہیں۔