ضلع ہسپتال گاندربل نئی عمارت میں منتقل،انتظامات کا فقدان

گاندربل //ڈسٹرکٹ ہسپتال گاندربل کو پچھلے ہفتہ نئی تعمیر شدہ عمارت میں منتقل کردیا گیا ہے لیکن تین عمارتوں میں سے ابھی تک صرف ایک ہی ایمرجنسی بلاک مکمل کیا گیا ہے۔ہسپتال میںروزانہ ایک ہزارمریضوں کی تشخیص کی جاتی ہے جبکہ مختلف علاقوں سے روزانہ دس حاملہ خواتین داخل کی جاتی ہیں۔سونمرگ سے لیکر ناگہ بل تک،صفاپورہ سے لیکر شالہ بگ تک کہیں بھی کوئی حادثہ پیش آئے تو ان مریضوں کو ابتدائی علاج کیلئے ڈسٹرکٹ ہسپتال گاندربل میں کیا جاتا ہے۔اگرچہ ہسپتال کو نئی عمارت میں منتقل کر دیا گیا لیکن اس وقت ڈسٹرکٹ ہسپتال میں طبی ونیم طبی عملہ کی کمی موجود ہے۔ہسپتال میں 69 افراد پر مشتمل عملہ تعینات ہے۔نیشنل رورل ہیلتھ مشن کے تحت ڈاکٹروں سمیت 18افراد تعینات ہیں جس میں سے ڈاکٹروں سمیت مزید 6 افرادکی کمی ہے۔ایمرجنسی بلاک میں آپریشن تھیٹر دوسری منزل پرہے لیکن مریضوں کے لئے لفٹ نہیں ہے ۔ لفٹ تعمیر کرنے کیلئے مارچ 2018 مقرر کو طے کیا گیا تھا ۔مقامی لوگوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ نئی عمارت میں ڈسٹرکٹ ہسپتال کو شفٹ کرنے کا کیا فائدہ جبکہ ہسپتال میں ڈاکٹروں،اور دیگر طبی عملے کی شدید قلت ہے۔