ضلع ہسپتال پونچھ میں عملے کی قلت ،مریض پریشان

 پونچھ//ضلع ہسپتال میں عرصہ دراز سے کئی آسامیاں خالی ہونے کی وجہ سے ہسپتال انتظامیہ اور مریضوں کومشکلات کا سامنا کرناپڑرہاہے۔ہسپتال میں33سپیشلیسٹ کی آسامیاں ہیں جن پر صرف14سپیشلسٹ ہی تعینات ہیں جبکہ 19آسامیاںخالی ہیں۔ 33میڈیکل افسروں کی جگہ صرف7میڈیکل افسر موجود18اسامیاںخالی ، ای اے ٹی ڈاکٹر نہیں، چمڑی کا ڈاکٹر نہیں ،آنکھوں کاڈاکٹر نہیں ریڈیالوجسٹ نہیں۔ ضلع ہسپتال میں سینئر سٹاف نرسوں کی18 اور جونیئر سٹاف نرسوں کی7اسمیاں خالی ہیں جس کی وجہ سے عوام کو علاج معالجے میں دشواریوں کا سامنا ہے۔ ہسپتال میں مختلف حادثات میں زخمی ہونے والے مریضوں کو اگر لایا جاتا ہے تو  انھیں جلد سے جلد جموں منتقل کیاجاتا ہے ۔اگر عوام کی سنیں تو عوام کئی طرح کی پریشانیوں کی شکایات کرتی ہیں۔خصوصی طور پر آنکھوں  کے امراض میں مبتلا مریضوں کوہسپتال میںڈاکٹر اور اسٹاف نہ ہونے کی وجہ سے علاج معالجے میں دشواریوں کاسامنا ہے۔اتنا کچھ ہونے کے باوجود رابطہ کرنے پر اس سلسلہ میں بات کرتے ہوئے چیف میڈیکل افسر ضلع ہسپتا ل پونچھ ڈاکٹر ممتاز احمد بھٹی نے کہا کہ ضلع ہسپتال میں مریضوں کو ہر طرح کی سہولت فراہم کی جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہسپتال میں ہر دن ایک ہزار مریضوں کی او پی ڈی ہوتی ہے جہاں سرجن، فیزیشن، دانتوں کے ڈاکٹر،بچوں کے داکٹر، خواتین کے ڈاکٹر،ایوش کے ڈاکٹر مریضوں کا طبی معائینہ کر تے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ امرجنسی چوبیسوں گھنٹے کھلی رہتی ہے جہاں100 مریضوں کوہر روز پوری سہولت فراہم کی جاتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہسپتال میںہر روز 25 سے30مریضوں کے داخلے ہوتے ہیں،کم از کم 20سے 25خواتین کی زچگی کرائی جاتی ہے امرجنسی آپریشن کئے جاتے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ ایک ماہ میں کم از کم300کے لگ بگ بڑے آپریشن ہوتے ہیں،اس کے علاوہ ایکسرے، سٹی سکین، الٹرا سونڈ کی سہولت کے ساتھ ساتھ مریضوں کے ہزاروں ٹیسٹ کروائے جاتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ مریضوں کی سہولت کے لئے دس ایمبولینس ہیں۔انہوں نے کہااگرچہ ان کے ہسپتال میں عملہ کی کمی ہے لیکن انتظامیہ کی جانب سے آنے والے مریضوں کو ہر طرح کی سہولت فراہم کی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ امید کرتے ہیں کہ ضلع ہسپتال میں خالی آسامیوں کو جلد پُرکیا جائے گا ۔