ضلع کی مانگ پر ہڑتال جاری ….مسلم برادری نے بھی حمایت کا اعلان کیا

نوشہرہ //نوشہرہ کی مسلم برادری نے بھی نوشہرہ کیلئے ضلع درجہ کی مانگ کی حمایت کا اعلان کیاہے ۔ یہ اعلان جمعہ کی نماز کے بعد کیاگیا ۔واضح رہے کہ بیوپار منڈل نوشہرہ کی کال پر پچھلے پندرہ روز سے ہڑتال جاری ہے اور لگاتار بازار اور سرکاری دفاتر بند ہیں ۔جمعہ کے روز کچھ لوگوںنے پولیس تھانہ پہنچ کر اپنی گرفتاری بھی دی ۔ وہیں جمعہ کی نماز کے بعد درجنوں نمازیوں نے پٹیل چوک نوشہرہ میں جمع ہوکر بیوپار منڈل کی کال کی حمایت کا اعلان کیا ۔ اس موقعہ پر خطاب کرتے ہوئے مولانا محمد ذاکر و ایڈووکیٹ حق نواز چوہدری نے کہاکہ نوشہرہ کو ضلع کا درجہ دینے کی مانگ کی مسلم برادری بھی حمایت کرتی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ نوشہرہ کے عوام کے ساتھ سوتیلا سلوک کیاجارہاہے جو ناقابل برداشت ہے ۔ ان کاکہناتھاکہ ان کی جائز مانگ پوری کی جائے اور ضلع کا درجہ دیاجائے ۔دریں اثناءنوشہرہ ، کالاکوٹ اور سندر بنی میں ہڑتال جاری ہے ۔نوشہرہ میں پندرہویں روز بھی مکمل بند رکھاگیا اور لوگوںنے ضلع درجہ کی مانگ کے حق میں احتجاج کیا ۔اس دوران تمام سرکاری دفاتر بھی بند رکھے گئے ۔ وہیں سندر بنی کے لوگوںنے جموں پونچھ شاہراہ کو کچھ دیر تک کیلئے بند کرکے حکومت کے خلاف نعرے بازی کی ۔انہوںنے کہاکہ حکومت ان کی مانگ کو نظرانداز کررہی ہے اور اس جانب کوئی دھیان نہیں دیاجارہا۔انہوںنے کہاکہ کل سندر بنی میں مکمل بند کیاجائے گا۔کالاکوٹ میں بھی ضلع درجہ کے حق میں احتجاج کیاگیا ۔مقامی لوگوںنے ایک میٹنگ کرکے یہ فیصلہ لیاکہ اگلے تین دنوں تک کیلئے کالاکوٹ کو مکمل بند رکھاجائے گا۔