ضلع کپوارہ میں بنیادی سہولیات کا فقدان | بجلی کٹوتی ،پانی کی قلت اور سڑکو ں کی خستہ حالی سے عوا م پریشان

کپوارہ//شمالی ضلع کپوارہ میں بنیادی سہولیات کی عدم دستیابی کی وجہ سے لوگوں کو سخت مشکلات درپیش ہیں۔صورتحال کا اندزاہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ موسم سرما شروع ہونے سے قبل ہی بجلی سپلائی میںکٹوتی شروع ہوچکی ہے ۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ ضلع میں دو گریڈ اسٹیشن قائم ہیں لیکن اس کے با وجود بھی بجلی کے بحران نے سنگین رخ اختیار کیا ہے اور شام ہوتے ہی متعدد علاقوں میں گھپ اندھیرا چھاجاتا ہے جس کی وجہ سے صارفین کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔رسیو نگ اسٹیشن کرالہ پورہ ،ترہگام اور کروسن لولاب کے تحت آنے والے علاقوں میں رہائش پذیر لوگو ں کا کہنا ہے کہ ان رسیو نگ اسٹیشنوں کے تحت آنے والے علاقوں میں بجلی کی کٹوتی شروع کی گئی ہے ۔لوگوں کا کہنا ہے کہ راجو اڑ ،رامحال ،آئورہ ،کرالہ پورہ ،ترہگام ،قاضی آ باد ،لنگیٹ اور لولاب کے مضافاتی علاقوں میں پینے کے پانی کی عدم دستیابی  نے سنگین رخ اختیار کیا ہے ۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ پینے کے پا نی کی قلت کے باعث انہیں گوناگوں مشکلات کا سامنا ہے ۔ لوگوں کی شکایت ہے کہ جل شکتی محکمہ نے ٹینکرو ں کے ذریعے پینے کا صاف پانی فراہم کرنے میں کوئی اقدام نہیں کیا اور لوگ ناصاف پانی استعمال کر نے کے لئے مجبور ہیں ۔اس دوران ضلع کے کے متعدد علاقوں میں سڑکو ں کی حالت اس قدر خراب ہے کہ ان سڑکو ں پر عبور و مرور میں دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ترہگام ،پوشہ پورہ ،شولورہ پنزگام ،درد پورہ کرالہ پورہ ،بٹہ پورہ ٹھنڈی پورہ ،چوکی بل زون ریشی ،میلیال فرکن اور دیگر علاقوں کے لوگو ں کا کہنا ہے کہ ان علاقوں کی خستہ حال سڑکو ں پر رواں سال کے دوران بھی میکڈم نہیں بچھا یا گیا اوریہ سڑکیں کھنڈرات میں تبدیل ہو چکی ہیں جس کے نتیجے میں لوگو ں کو معمولی بارشو ں کے دوران سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔مقامی لوگو ں نے ضلع انتظامیہ اور متعلقہ محکموں کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ موسم سرما شروع ہونے سے قبل ہی لوگو ں کے بنیادی مسائل کو حل کرنے کی طرف توجہ دی جائے ۔