صہیونی فائرنگ سے 3نوجوان جاں بحق | اسکول سمیت 8عمارتیں مسمار

 بیت المقدس//اسرائیلی فوج نے فلسطین کے مختلف علاقو ں میں کارروائیوں کے دوران فائرنگ کرکے 3نوجوانوں کو جاں بحق کردیا۔ فلسطینی ذرائع ابلاغ کے مطابق نابلس کے مشرق میں بلاطہ پناہ گزین کیمپ میں کارروائی کے دوران 17 سالہ نادر ہیثم ریان کو گولی مار کر ہلاک اور 7دیگر کو زخمی کر دیا گیا۔ اسرائیلی فوجیوں نے کیمپ پر دھاوا بولا اور عمار عرفات نامی شہری کے گھر کا گھیراوکرنے کے بعد اسے گرفتار کرلیا۔ زخمیوں میں 14 سالہ بچہ بھی ہے، جسے تشویشناک حالت میں نابلس کے رفیدیا شفا خانے لے جایا گیا۔ اس کے بعد بیت المقدس کے شمال مشرق میں واقع قلندیا پناہ گزین کیمپ میں فائرنگ سے علاشحام نامی نوجوان کو فائرنگ کرکے ہلاک کیا گیا۔ اسی طرح کی ایک اور کارروائی میں صحرائے نقب کے رہط شہر میں 27سالہ سند الہر نامی فلسطینی نوجوان کو سادہ لباس پولیس اہلکاروں نے صبح سویرے ہلاک کر دیا۔ادھر صہیونی بلدیہ نے بیت المقدس میں اسکول سمیت 8مکانات کو مسمار کردیا۔ دوسری جانب امریکا کی جارج ٹاون یونیورسٹی میں گریجویشن کے طلبہ نے اسرائیل کو نسل پرست ریاست قرار دیا۔طلبہ اتحاد کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے یونیورسٹی کو اسرائیل کے دورے کی مالی اعانت کے لیے 30ہزار ڈالر مختص کرنے سے روک دیا ہے۔