صورہ میں داخل 4مریضوں کے رپورٹ منفی

 سرینگر //کشمیر میں بیرون ممالک اور ملک کی مختلف ریاستوں سے آنے والے افراد کی سکریننگ کا عمل جاری ہے اور سنیچر کو مختلف ریاستوں سے آنے والے 5ہزار لوگوں کی سکریننگ کی گئی جبکہ 71افراد چین، کوریا، ایران، ملیشیاء، سعودی عرب اور جنوب مشرقی ایشیاء کے دیگر ممالک سے کشمیر وارد ہوئے ۔ادھر لور منڈا میں سنیچر کو 700گاڑیوں میں سفر کرنے والے لوگوں کی سکریننگ کا عمل انجام دیا گیا  جبکہ شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ میں زیر علاج 4مریضوں کی تشخیصی رپورٹ منفی آئی ہے۔ سنیچر کے سکرینگ عمل کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر ڈاکٹر سمیر احمد متو نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ کشمیر میں ائیر پورٹ پر دن کے دو بجے تک ہم نے 2800مسافروں کی سکریننگ کا عمل مکمل کیا تھا جو شام چھ بجے تک 5000تک ہوگیا ‘‘۔ انہوں نے کہا کہ لوور منڈا میں ہم نے دن دو بجے تک 210گاڑیوں میں سوار افراد کی سکریننگ کی تھی اور انکی سفری تفاصیل حاصل کی تھیں، شام چھ بجے تک یہ تعداد 700ہوگئی۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر سے 16افراد کے نمونے ہم نے تشخیص کیلئے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف وائرولاجی بھیجے تھے اور 16افراد کی رپورٹیں آگئی ہیں اور وہ سب منفی ہیں۔ ڈاکٹر سمیر متو نے کہا کہ کشمیر میں ہم نے188افراد کو نگرانی میں رکھا تھا جن میں 141افراد نے نگرانی کے 28دن مکمل کرلئے ہیں جبکہ 47افراد ابھی بھی زیرنگرانی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان 42افراد کو ہم نے گھروں میں ہی زیر نگرانی رکھا ہے اور ڈاکٹروں کی ٹیمیں دن میں دو بار انکی تفاصیل حاصل کررہے ہیں۔ ڈاکٹر متو نے کہا ’’محکمہ صحت نے جموں و کشمیر میں جموں میڈیکل کالج اور سکمز صورہ میں خصوصی تشخیصی سہولیات فراہم کرنے کی مرکز سے سفارش کی تھی اور مرکزی سرکار نے  دونوں جگہوں پر سہولیات فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے اور یہ دونوں لیبارٹریاں آئندہ ایک ہفتے کے اندر اندر کرونا وائرس کی تشخیص کا عمل شروع کردیں گی‘‘۔  انہوں نے کہا کہ کشمیر ابھی کرونا وائرس سے آزاد ہے کیونکہ تمام رپورٹیں منفی آئی ہیں تاہم لوگوں کو احتیاط برتنے کی ضرورت ہے۔ادھر میدیکل سائنسز صورہ میں داخل مشتبہ 5مریضوں کے رپورٹ منفی آئے ہیں جن میں ایک کو گھر روانہ کردیا گیا ہے جبکہ دیگر 4ابھی بھی اسپتال میں زیر نگرانی ہیں۔ انچارج میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر غلام حسن یتو نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ آئیسولیشن وارڈ میں داخل پانچوں مریضوں کی تشخیصی رپورٹ منفی آئی ہے تاہم 4ابھی بھی آئیسولیشن وارڈ میں زیر نگرانی رکھے گئے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ چاروں مریضوں کی روزانہ طبی جانچ ہورہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ 4کی رخصتی کا فیصلہ ڈاکٹروں کی مخصوص ٹیم مطمئن ہونے کے بعد ہی کریگی۔