صوبائی کمشنر نے سٹیٹ لائیولی ہڈ مشن کی کارکردگی کا جائزہ لیا

سرینگر//صوبائی کمشنر کشمیر بصیر احمد خان نے متعلقہ آفیسران کو نئے سیلف ہیلپ گروپس کی تشکیل کے دوران زیادہ سے زیادہ نوجوانوں اورخواتین کو شامل کرنے کی ضرورت پر زوردیا ہے کیونکہ غریبی کو ہٹانے اور خواتین کو بااختیار بنانے کے لئے یہ ناگزیر ہے ۔انہوںنے ایس اوجیز کو معاشی طور مزید فعال اور پائیدار بنانے کی ہدایت دی تاکہ وہ روزگار کے بہتر وسائل دستیاب کرسکیں۔صوبائی کمشنر نے یہ ہدایات جے اینڈ کے سٹیٹ لائیولی ہُڈس مشن کاجائزہ لینے کے سلسلے میں منعقدہ ایک میٹنگ کے دوران دیں۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ وادی بھر میں21362ایس اوجیز کام کررہے ہیں جن کے ساتھ1.83لاکھ ممبران اور 1949تنظیمیں جڑی ہوئی ہیں۔اس موقعہ پر مزید بتایا گیا کہ ’’اُمید‘‘ کے ذریعے روزگار کے کافی وسائل دستیاب ہورہے ہیں اوریہ مالی اداروں اوروادی کے نوجوانوں کے لئے ایک پُل کی حیثیت سے کام کررہا ہے تاکہ نوجوانوں کو پائیدار بنیادوں پر روزگار فراہم ہوسکے۔اس دوران صوبائی کمشنر نے کہا کہ سرکار نے بیروزگار نوجوانوں اورخواتین کے لئے روزگار کی سبیل اوراُن کے معیار طرز حیات کے لئے اپنی کوششوں کو جاری رکھا ہے اوراس سلسلے میں متعلقہ محکموں کی طرف سے بھرپور تیکنیکی تعائون فراہم کیاجارہا ہے۔