صنعتی ترقی کیلئے افرادی قوت کی پیداوار ترجیح ہونی چاہئے

جموں //پرنسپل سیکرٹری سکل ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ ( ایس ڈی ڈی ) ڈاکٹر اصغر حسن سامون نے صنعتی تربیتی اداروں ( آئی ٹی آئی ) میں نئے چہروں کو شامل کرنے پر زور دیا ۔ ڈاکٹر سامون جموں ڈویژن میں آئی ٹی آئی کے آئی ایم سی کے کام اور کارکردگی کا جائیزہ لینے کیلئے منعقدہ میٹنگ سے خطاب کر رہے تھے ۔ میٹنگ میں سیکرٹری سکل ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ ناظم ضیاء خان اور محکمہ کے دیگر افسران نے شرکت کی ۔ جموں ڈویژن میں ڈائریکٹر ایس ڈی ڈی ، آئی ایم سی کے چیئر پرسن اور آئی ٹی آئی کے سپرانٹنڈنٹ نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے شرکت کی ۔ پرنسپل سیکرٹری نے افسران سے کہا کہ وہ ان آئی ایم سی کی تشکیل نو کی تلاش کریں تا کہ ان کے کام میں نئی روح پھونکی جا سکے ۔ انہوں نے زور دیا کہ وہ مختلف صنعتی پس منظر سے تعلق رکھنے والے ممبروں کو شامل کریں تا کہ ان مہارت فراہم کرنے والے اداروں کے کام میں تنوع پیدا ہو ۔ ڈاکٹر سامون نے کہا کہ پہلی بار جب جموں و کشمیر کی صنعتی پالیسی بہت بڑی صنعتی ترقی کا وعدہ کرتی ہے اس لئے ان کی ضروریات کو پورا کرنے کیلئے متعلقہ افرادی قوت کی پیداوار بھی ہماری ترجیح ہونی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ حال ہی میں اعلان کردہ بڑے صنعتی پیکیج سے یہاں نئے صنعتی یونٹس کے قیام میں بھی مدد ملے گی ۔ ڈاکٹر سامون نے کہا کہ آئی ایم سی 2014 میں تشکیل دی گئی تھی تا کہ صنعتکاروں کو ہماری آئی ٹی آئی کے انتظام میں شامل کیا جا سکے ۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ ان آئی ایم سی کے چیئر پرسن صنعتکار ہیں جن کے پاس نصاب میں ترمیم اور نئے کورسز متعارف کرانے کے اختیارات ہیں ۔ پرنسپل سیکرٹری نے افسران سے کہا کہ وہ مقامی صنعتکاروں اور صنعتوں کی فہرست فراہم کریں تا کہ نئی کمیٹیاں ان کے ساتھ بطور ممبر تشکیل دی جائیں ۔ ڈاکٹر سامون نے موجودہ آئی ایم سی کے کام کا بھی جائیزہ لیا ۔ انہوں نے ان کی طرف سے منعقد کی جانے والی ملاقاتوں کے بارے میں پوچھا ۔ انہوں نے اس طرح کی میٹنگوں میں لئے گئے مختلف فیصلوں پر کی گئی کاروائی کا مزید جائیزہ لیا ۔پرنسپل سیکرٹری کو بتایا گیا کہ 52 آئی ٹی آئی میں سے 48 میں آئی ایم سی ہیں ۔ انہیں یہ بھی بتایا گیا کہ جموں اور سرینگر کے ماڈل آئی ٹی آئی کیلئے نئی آئی ایم سی کی تشکیل آخری مرحلے میں ہے اور دیگر تمام آئی ٹی آئی کو جلد ہی آئی ایم سی فراہم کیا جائے گا جو کہ مہارت فراہم کرنے والے ان اداروں کے کام کو مزید تقویت بخشے گا ۔