صنعتی اراضی الاٹمنٹ پالیسی منظور

جموں// لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کی سربراہی میںانتظامی کونسل کی میٹنگ میں  جموں اینڈ کشمیر انڈسٹریل لینڈ الاٹمنٹ پالیسی 2021-30 کو منظوری دی ۔ جس کے تحت جموں اور کشمیر میں یکساں صنعتی ترقی کو فروغ دینے کیلئے ایک منظم صنعتی لینڈ بنک کے قیام کو منظوری دی گئی۔نئی پالیسی سے اراضی سے متعلق مختلف معاملات ،جو جموں کشمیر میں صنعتی ترقی میں رکاوٹ پیدا کر رہے تھے، کا ازالہ کیا گیا ہے ۔نئی پالیسی کے تحت صنعتی علاقوں کیلئے مختلف معاملات کو مدِ نظر رکھ کر بلاک اور میونسپل سطح پر زون مقرر کئے جائیں گے ۔ پالیسی کے تحت 30 دن کے اندر صنعتوں کیلئے اراضی کے الاٹمنٹ سے متعلق درخواستوں کی جانچ پڑتال اور اُن کا جائیزہ لینے کیلئے صوبائی سطح کی پروجیکٹ اپرائیزل اور ایولویشن کمیٹیاں تشکیل دی جائیں گی ۔ چوٹی کے سطح کی لینڈ الاٹمنٹ کمیٹی ، ہائی لیول لینڈ الاٹمنٹ کمیٹی اور صوبائی سطح کی لینڈ الاٹمنٹ کمیٹی 45 دنوں کے اندر  بالترتیب200 کروڑ ، 50 سے 200 کروڑ اور 50 کروڑ روپے کی مالیت کے پروجیکٹوں کیلئے دی گئی درخواستوں کے حق میں اراضی کی الاٹمنٹ کا فیصلہ کرے گی ۔ پالیسی کے تحت اراضی سرمایہ کار کوپہلے مرحلے میں40 سال کیلئے لیز پر دی جائے گی جس میں 99 سال کی توسیع بھی کی جا سکتی ہیں اور دو سال کی مقررہ مدت کے اندر اگر سرمایہ کار موثر اقدامات اٹھانے میں ناکام رہے تو اس کی اراضی کی الاٹمنٹ منسوخ بھی ہو سکتی ہے اور اگر کوئی صنعتی یونٹ تین سال کے اندر مصنوعات تیار کرنے میں ناکام رہے یا لیز ڈیڈ کی خلاف ورزی کرے تو اُن کی اراضی کی الاٹمنٹ منسوخ ہو گی ۔ پالیسی کے اغراض و مقاصد میں پائیدار صنعتکاری اور روز گار کے مواقعے پیدا کر کے علاقے کی یکساں ترقی شامل ہے اور صنعتی استعمال کیلئے اراضی کی الاٹمنٹ کیلئے ایک شفاف طریقہ کار اپنانا شامل ہے ۔