صرف سیاسی جمہوریت نہیں سماجی جمہوریت بھی ضروری مدت کار کاکے آخری دن صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند کاالوداعی خطاب

نئی دہلی//یو این آئی//صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند نے کہا ہے کہ ہمیں صرف سیاسی جمہوریت سے ہی مطمئن نہیں ہونا چاہئے بلکہ سماجی جمہوریت کی تعمیر کے لئے کام کرنا چاہئے کیونکہ یہ آزادی، مساوات اور بھائی چارے کے اصول شامل ہوتے ہیں۔مسٹر کووند نے صدر کے طور پر اپنی مدت کار ختم ہونے سے قبل اتوار کی شام یہاں قوم سے اپنے الوداعی خطاب میں کہا کہ آئین کے معمار ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر نے دستور اپنائے جانے سے ایک دن پہلے آئین اسمبلی میں اپنے اختتامی کلمات میں، جمہوریت کے سماجی اور سیاسی جہتوں کے درمیان فرق کو واضح کیاتھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ ہمیں صرف سیاسی جمہوریت سے مطمئن نہیں ہونا چاہیے ۔ سبکدوش ہونے والے صدر نے بابا صاحب کے بیان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا، ‘‘میں آپ سب کے ساتھ ان کے الفاظ شیئر کرتا ہوں۔ ہمیں اپنی سیاسی جمہوریت کو ایک سماجی جمہوریت بھی بنانا چاہیے ۔ سیاسی جمہوریت زندہ نہیں رہ سکتی اگر وہ سماجی جمہوریت پر مبنی نہ ہو۔ سوشل ڈیموکریسی سے کیا مراد ہے ؟ اس کا مطلب زندگی کا ایک ایسا طریقہ ہے جو آزادی، مساوات اور بھائی چارے کو زندگی کے اصولوں کے طور پر تسلیم کرتا ہے ۔ آزادی، مساوات اور بھائی چارے کے ان اصولوں کو تثلیث کے الگ الگ حصوں کے طور پر نہیں دیکھا جانا چاہیے ۔ ان کی تثلیث کا اصل مفہوم یہ ہے کہ ان میں کسی بھی حصے کو ایک دوسرے سے الگ کرنے پر جمہوریت کا اصل مقصد ہی ختم ہو جاتا ہے ۔مسٹر کووند کی مدت کارآج ختم ہو رہی ہے اوران کی جگہ نو منتخب صدر دروپدی مرمو پیر کو ملک کی 15ویں صدر کے طور پر حلف لیں گی۔