صد فیصد بجلی سپلائی کاخواب سراب | ریاسی کے درجنوں دیہات آج بھی برقی رُوسے محروم

ریاسی// حکومت کی جانب سے بنیادی سہولیات کی فراہمی کے بلند بانگ دعو ئوں کے بیچ اس جدید دور میں بھی ریاسی ضلع کے درجنوں گاؤں بجلی جیسی سہولت سے محروم ہیں ۔ریاسی ضلع کے درجنوں دیہات جن میں شکاری،چانہ،بگوداس،نیرم،رنگ بنگلہ ،شبراس ،دیول ،ڈوگا ،نہوچ ، برنسال وغیرہ موجود ہیں، میں ابھی تک بجلی فرہم نہیں کئی گئی ہے اور یہ لوگ اس ڈیجیٹل دور میں بھی بجلی کا بلب دیکھنے کو ترس رہے ہیں۔اگرچہ سال 2018 میں سوبھاگیہ سکیم کے تحت حکومت کی جانب سے ہر گھر میں بجلی فرہم کرنے کا دعویٰ کیا گیا اور 2019 میں جموں کشمیر کو سوبھاگیہ سکیم کے تحت 100 فیصد بجلی فرہم کرنے کیلئے ایوارڈ سے نوازا گیا لیکن ابھی بھی ان علاقہ جات تک بجلی نہیں پہنچ سکی ہے اور حکومت کے بلند بانگ دعوے کھوکھلے ثابت ہوئے ہیں۔لوگوں کا کہنا ہے کہ اگرچہ سال 2018 میں ان علاقہ جات میں بجلی کے کھمبے تو لگائے گئے ہیں لیکن ابھی تک یہ لوگ بجلی کی ترسیلی لائنیں بچھانے کے انتظار میں ہیں۔نیرم رنگ بنگلہ کے لوگوں نے کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ یہ علاقہ مہور ہیڈکوارٹر سے چند ہی کلومیٹر کی دوری پر ہے لیکن انہیں ابھی بھی بجلی جیسی سہولیت سے محروم رکھا گیا ہے۔مقامی باشندوں کا کہنا ہے کہ آج کے دور میں بجلی کے بغیر کوئی بھی کام کرنا ممکن نہیں ہے اور انہیں اپنے موبائل چارج کرنے کیلئے بھی دوسرے گاؤں کا رخ کرنا پڑتا ہے۔لوگوں کا کہنا ہے کہ بجلی کے بغیر بچوں کی پڑھائی پر بھی برا اثر پڑ رہا ہے۔ان کا مزید کہنا ہے کہ کروناوائرس کے اس دور میں سبھی اسکول اور کالج بند ہیں اور بچوں کو آن لائین کلاسز دی جارہی ہے لیکن بجلی نا ہونے کے باعث ان کے بچوں کے موبائل چارج نا ہونے کی وجہ سے وہ آن لائین کلاسز نہیں دے پارہیں ہیں اور ان کی پڑھائی بری طرح سے متاثر ہورہی ہے۔مقامی لوگوں نے حکومت سے مانگ کی ہے کہ ان علاقہ جات میں بجلی فرہم کی جائے۔
 
 

منڈی میں بجلی کی آنکھ مچولی جاری |  عوام کو مشکلات کا سامنا،بجلی کے اضافی بل عوام کیلئے دردِ سر

عشرت حسین بٹ

منڈی//ضلع پونچھ کی تحصیل منڈی میں گزشتہ ایک ہفتہ سے عوام کو بجلی کی آنکھ مچولی کی وجہ سے کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ ایک لاکھ سے زاید آبادی والی تحصیل میں بجلی کے آنے جانے کا کویی بھی وقت معین نہیں ہے۔ شام ہوتے ہیں بجلی غائب ہو جاتی ہے اور اگر رات کو کہیں بجلی آتی بھی ہے تو موم بتی سے بجلی کا بلب ڈھونڈنا پڑتا ہے صارفین کا کہنا تھا کہ تحصیل کے متعدد علاقوں کے لوگوں کو محکمہ کی جانب سے اضافی بل ارسال کیے جاتے ہیں جو کہ یہاں کی غریب عوام کے ساتھ بہت بڑی نا انصافی ہے۔لوگوں نے بتایاکہ گزشتہ ایک ہفتہ سے پوری تحصیل منڈی میں بجلی کا نظام درہم برہم ہو چکا ہے نہ بجلی کے آنے کا وقت مقرر ہے اور نہ ہی جانے کا۔ ان کا کہنا تھا کہ محکمہ کو چاہیے کہ وہ عوام کو بہتر بجلی پہنچائیں اور جو لوگوں کو اضافی بل دیے جاتے ہیں اس میں انتظامیہ لوگوں کے ساتھ انصاف کریں۔