شیخ محمد عبداللہ کی 118 ویں یومِ پیدائش پر شیرِ کشمیر بھون جموں سمیت صوبہ بھر میں تقریبات، مرحوم لیڈر کو شاندارخراج عقیدت این سی لوگوں کے حقوق اور امنگوں کے تحفظ کیلئے پرعزم: سدھوترا | این سی عام عوام کی بحالی کیلئے لڑائی جاری رکھے گی: رتن لال

عظمیٰ نیوز سروس

جموں// جموں و کشمیر نیشنل کانفرنس نے منگل کو شیرِ کشمیر بھون جموں میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران شیخ محمد عبداللہ کو ان کی 118 ویں یوم پیدائش پر خراج عقیدت پیش کیا۔ اس موقع پر جے کے این سی کے ایڈیشنل جنرل سکریٹری اجے سدھوترہ ، رتن لال گپتا، صوبائی صدر سریندر چوہدری مرکزی سیکرٹری عبدالغنی ملک سابق وزیر اور زونل صدر ادھم پور ریاسی ، بملا لوتھرا ، شیخ بشیر احمد ، ستونت ڈوگرہ اور پارٹی کے دیگر کارکنوں نے شیخ محمد عبداللہ کو خراج عقیدت پیش کیا۔ تقریب کا آغاز قرآن خوانی سے ہوا جس کا اہتمام جی ایچ ملک سینئر رہنما نے کیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے اجے سدھوترہ نے کہا کہ سیکولر اخلاق کو برقرار رکھنا شیخ عبداللہ کو بہترین اور مناسب خراج عقیدت ہے، جو برصغیر میں اپنے دور کے سب سے بڑے لیڈروں میں سے ایک ہیں۔ “ہم اس وراثت کے قابل فخر وارث ہیں”۔ انہوں نے تاریخی اور اہم لینڈ ریفارمز ایکٹ کو یاد کرتے ہوئے کہا، جس نے کسانوں کو راتوں رات اپنی قسمت کا مالک بنا کر بااختیار بنایا۔ غلط حکمرانی اور ناانصافی کے عالم میں، سابق وزیر نے زور دے کر کہا کہ نیشنل کانفرنس جموں و کشمیر کے لوگوں کے لیے امید کی کرن بن کر کھڑی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور عمر عبداللہ کی قیادت میں نیشنل کانفرنس نے وقار، سالمیت اور بنیادی حقوق کی بحالی کے اپنے عزم میں اٹل رہتے ہوئے لوگوں کے حقوق اور امنگوں کے تحفظ کے لیے مسلسل جدوجہد کی ہے۔ رتن لال گپتا نے اپنے خطاب میں شیخ عبداللہ کی زندگی کے مختلف پہلوؤں پر گفتگو کی اور معاشرے کے کمزور اور پسے ہوئے طبقوں کے حالات کو بہتر بنانے کے لیے ان کے تعاون پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے مزید کہا کہ شیخ عبداللہ کا سیکولر اور ترقی پسند نقطہ نظر نسلوں کے لیے تحریک کا باعث بنے گا۔ شیخ عبداللہ نے جموں و کشمیر کے لوگوں کی امنگوں کی اس طرح علامت کی جس کا کوئی دوسرا شخص خواب میں بھی نہیں دیکھ سکتا تھا۔ گپتا نے کہا کہ شیخ عبداللہ کو بہترین خراج عقیدت ہندوؤں، مسلمانوں اور سکھوں کے درمیان ہم آہنگی کو مضبوط کرنا ہوگا۔ انہوں نے پارٹی کیڈر پر بھی زور دیا کہ وہ شیخ عبداللہ کی طرف سے دی گئی اخوت اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی وراثت کو برقرار رکھنے اور اسے برقرار رکھنے کا عہد کریں۔ سریندر چودھری مرکزی سیکرٹری نے شیخ محمد عبداللہ کو خراج عقیدت پیش کیا اور جے کے اینس اور اس کی قیادت کو مضبوط بنا کر جموں و کشمیر کو پرامن، ترقی پسند اور ملک کے سیاسی طور پر مستحکم حصے کے طور پر چلانے کے لیے کام کرنے کا عہد کیا۔ شیخ بشیر احمد نے کہا کہ نیشنل کانفرنس ایک سیکولر پارٹی ہے اور صرف وہی جموں و کشمیر کے لوگوں کی امنگوں کو پورا کرے گی۔ انہوں نے جموں و کشمیر کے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ جموں و کشمیر کی مساوی ترقی اور روشن مستقبل کے لیے ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور عمر عبداللہ کے ہاتھ مضبوط کریں۔ لیجنڈری رہنما عبدالغنی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ملک زونل صدر ادھم پور ریاسی شیر کشمیر کی زندگی کے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالی اور بہت سارے لوگوں خصوصاً معاشرے کے کمزور اور پسے ہوئے طبقوں سے تعلق رکھنے والوں کی بہتری کے لیے ان کی قربانی اور شراکت کو یاد کیا۔ بملا لوتھرا نے اپنے خطاب میں کہا کہ پارٹی صنفی مساوات کی جدوجہد میں ہمیشہ سب سے آگے رہی ہے، اور یہ یقینی بنانے کے لیے پرعزم ہے کہ جموں و کشمیر میں خواتین کو ہر ممکن طریقے سے بااختیار بنایا جائے۔ انہوں نے کہا، “خواتین ہمارے معاشرے کا ایک لازمی حصہ ہیں، اور یہ ہمارا فرض ہے کہ انہیں ہر شعبے میں بااختیار بنائیں ،”۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ خواتین کو بااختیار بنانا صرف ایک سیاسی نعرہ نہیں ہے بلکہ این سی کے نظریہ کا بنیادی اصول ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جمہوریت میں اور ریاست کے مستقبل کی تشکیل میں خواتین کا اہم کردار ہے۔

بانہال میں نیشنل کانفرنس کی تقریب، مرحوم لیڈر کو خراج عقیدت
شیخ محمد عبداللہ کے فلاحی اقدامات کی تاریخ میں کوئی مثال نہیں: شاہین
محمد تسکین
بانہال // بانہال میں نیشنل کانفرنس کی طرف سے شیخ محمد عبداللہ کو ان کے 118 ویں یوم پیدائش پر زبردست خراج عقیدت پیش کیا گیا اور ان کے کارناموں کو یاد کیا گیا۔ اس مناسبت سے نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر اور ضلع صدر رام بن حاجی سجاد شاہین کی رہائش گاہ پر ایک پروگرام کا انعقاد کیا گیا جس میں نیشنل کانفرنس کے سینکڑوں کارکنوں اور عہدیداروں نے شرکت کی۔ اس موقع پر سجاد شاہین نے کہا کہ شیر کشمیر شیخ محمد عبداللہ ریاست کے سب سے قد آور لیڈر تھے جنہوں نے ریاست کے عوام کو غربت کے چنگل سے نجات دلانے کے لیے اپنی زندگی کا بڑا حصہ قربان کیا۔ انہوں نے کہا کہ شیخ عبداللہ کی طرف سے غریبوں کو زمین سونپنے اور ریاست میں مفت تعلیم متعارف کرانے کے انقلابی قدم کی ریاست کی تاریخ میں کوئی مثال نہیں ملتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ شیخ محمد عبدااللہ ہندو، مسلم، سکھ، عیسائی کے آپسی بھائی چارے کے سب سے بڑے علمبردار تھے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست جموں و کشمیر کیلئے شیخ محمد عبداللہ اور نیشنل کانفرنس کی قربانیوں کو کبھی فراموش نہیں کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سابقہ ریاست کے لوگ خود گواہ ہیں کہ نیشنل کانفرنس نے اپنے قیام سے لیکر اب تک ریاست اور اس کے عوام کے وقار اور عزت کیلئے جو جدوجہد کی ہے اور نیشنل کانفرنس کی قیادت نے ہمیشہ ہی ذاتی مفادات پر عوامی خدمت کو ترجیح دی ہے اور خلوص نیت سے عوام کی خدمت کی ہے۔ سابقہ ریاست کے لوگوں کے حقوق کو مزید غصب کرنے کی سازشوں کے بارے میں لوگوں کو خبردار کرتے ہوئے سجاد شاہین نے مزید کہا کہ این سی ایک متحرک عوامی تحریک ہے جو تنہا ریاست کو موجودہ بحران سے نکال سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل کانفرنس نے ریاست کیلئے عظیم قربانیاں دی ہیں اور اس نے ریاست کے مفادات پر کبھی سمجھوتہ نہیں کیا۔

اودھم پور میں تقریب، مرحوم لیڈر کو خراجِ عقیدت پیش
ادھم پور// جموں و کشمیر نیشنل کانفرنس، ادھم پور یونٹ نے منگل کو اودھم پور میں منعقد ایک تقریب میں شیخ محمد عبداللہ کو ان کی 118 ویں یوم پیدائش پر خراج عقیدت پیش کیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہو ئے ضلع صدر سنیل ورما نے کہا کہ اپنے کرشماتی سیاسی کیرئیر کے دوران انہوں نے جموں و کشمیر کے لوگوں کی امنگوں کی علامت کی جس کا کوئی ایک فرد خواب میں بھی نہیں سوچ سکتا تھا۔ “انکاکہناتھا’’شیخ محمد عبداللہ کو بہترین خراج عقیدت ہندوؤں، مسلمانوں اور سکھوں کے درمیان ہم آہنگی کو مضبوط کرنا ہوگا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ شیخ محمد عبداللہ کے ذریعہ ‘ہندو، مسلم، سکھ اتحاد ‘ کے نعرے کی تبلیغ اور عمل ریاست کی وادیوں، ہوائی جہازوں اور پہاڑوں میں مسلسل گونج رہا ہے۔ یہ ریاست کے شاندار تانے بانے میں مرکزی حیثیت رکھتا ہے۔