شہر کے گلی کوچوں میں کتوں کا راج

سرینگر //شہر سرینگر کے مختلف علاقوں میں آوارہ کتوں کی تعداد میں غیر معمولی اضافہ ہونے کے باعث لوگوں کی نیندیں حرام ہو گئی ہیں۔ لیکن کتوں کو ٹھکانے لگانے کیلئے میونسپل حکام کے پاس کوئی بھی ٹھوس منصوبہ نہیں ہے۔ شہر سرینگر میں آوارہ کتوں نے اپنا راج قائم کیا ہوا ہے اور شہر سرینگر کی ہر سڑک ہر نکڑ اور ہر گلی میں آوارہ کتوں کی نقل و حرکت سے بچوں ، بزرگوں اور خواتین کو چلنے پھرنے میں خوف محسوس ہورہا ہے جبکہ ہسپتالوں کی پارکوں میں آوارہ کتے اور تیمادار ایک ہی جگہ بیٹھ کر کھانا کھاتے ہوئے دیکھے جاسکتے ہیں جس کی وجہ سے ہسپتالوں میں زیر علاج مریضوں کے ساتھ رہنے والے تیماداروں کو ذہنی کوفت کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ شہر خاص کے نرورہ عیدگاہ، رعناواری،لا ل بازار،قرفلی محلہ حبہ کدل اور حاجی آباد بمنہ کے علاوہ ، برزلہ الوچی باغ ، جواہر نگر ، چھان پورہ ، نٹی پورہ ، مہجور نگر ، کرسو راج باغ بنڈ ،اولڈ برزلہ ، باغ مہتاب اورکرالپورہ ، میں آوارہ کتوں نے لوگوں کا جینا دو بھر کردیا ہے ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ نماز مغرب کے بعد لوگ گھروں سے باہر نکلنے میں خوف محسوس کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کتوں کو ٹھکانے لگانے کے حوالے سے انہوں نے کئی بار اعلیٰ حکام کو بھی آگاہ کیا لیکن اُس جانب کوئی بھی دھیان نہیں دیا جاتا ہے ۔لوگوں نے متعلقہ محکمہ سے اپیل کی ہے کہ آوارہ کتوں کو ٹھکانے لگانے کیلئے اقدامات کئے جائیں تاکہ انہیں مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔