شہر میں نقب زنی کا معمہ حل

 سرینگر//شہر میںپولیس نے چوری کے ایک معمہ کوحل کرتے ہوئے لاکھوں روپیہ مالیت کے موبائیل فون اور دوسرا قیمتی سازو سامان برآمد کیا۔ پولیس پریس بیان کے مطابق 12جنوری 2019کو ساحل حسین ڈار ولد غلام حسین ساکنہ خواجہ پورہ سید پورہ رعناواری نے پولیس اسٹیشن میں تحریری طورپر شکایت درج کی کہ رعناواری چوک میں قائم اے ایس کیمونکیشن نامی اُن کی دکان میں نامعلوم افراد 11اور 12جنوری کی درمیانی رات کو نقب لگا کر لاکھوں روپیہ مالیت کے موبائیل فون اور دوسرا سامان چُرا کر رفوچکر ہوئے۔ پولیس نے اس سلسلے میں ایف آئی آر زیر نمبر 03/2019کے تحت کیس درج کرکے تحقیقات شروع کی۔ایس ڈی پی او خانیار راجا زہیب کی نگرانی میں ایس ایچ او اعجاز احمد کی سربراہی میں ایک خصوصی تحقیقاتی ٹیم کا قیام عمل میں لایا گیا ۔ تفتیش کے دوران فارینسک ٹیم نے جائے وقوع کا معائنہ کیا اور سی سی ٹی وی فوٹیج بھی حاصل کی گئی ۔ تحقیقات کے دوران دو مشتبہ افراد الطاف احمد شاہ ولد محمد یوسف شاہ ساکنہ خواجہ پورہ سید پورہ رعناواری اور شاہد احمد بٹ ولد اسدا ﷲ بٹ ساکنہ رنگہ پرستان رعناواری، کو پوچھ تاچھ کے سلسلے میں پولیس اسٹیشن طلب کیا گیا ۔ دورانِ پوچھ گچھ مذکورہ افراد نے اپنا جرم قبول کرتے ہوئے بتایا کہ وہ چوری کی نیت سے دکان پر کئی روز نظر گزر رکھے ہوئے تھے اور اُس کے بعد نقب لگانے کی خاطر ایک منصوبہ تیار کیا۔ گرفتار شدگان کی نشاندہی پر پولیس نے چُرائے گئے 35موبائیل فون ، موبائیل فونوں کیلئے درکار سازو سامان کو برآمد کرکے ضبط کیا۔