شہر میں تیزی سے وائرس پھیلنے لگا | آنے والے دو ہفتے اہم : ڈی سی سرینگر

سرینگر //ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر محمد اعجاز اسد نے کہا ہے کہ پچھلے ایک ہفتہ سے سرینگر میں متواتر طور پر کورونا متاثرین کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے اور روزانہ متاثر ہونے والے افراد میں سے 60فیصد کا تعلق ضلع سرینگر سے ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگلے دو ہفتے ہمارے لئے اہم ہونگے، اسلئے ہمیں محتاط رہنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ اگرلوگ ایس او پیز پر عمل نہیں کریں گے تو وائرس کی تیسری لہر سرینگر شہرسے ہی شروع ہوگی۔انہوں نے سیول لائنز کے مختلف علاقوں کا دورہ کیا اور لوگوں سے ایس او پیز پر عمل کرنے کی تلقین کی ۔ ریگل چوک کا معائنہ کرنے کے دوران ضلع مجسٹریٹ نے کہا ’’ روزانہ مثبت آنے والے کیسوں میں اضافہ اس بات کی گواہی ہے کہ لوگوں نے پھر سے ایس او پیز پر عمل کرنا چھوڑ دیا ہے‘‘۔ اعجاز اسد نے بتایا ’’لال بازار میں 20،بمنہ میں 17 ،چھانہ پورہ میں18جبکہ دیگر کئی علاقوں میں متاثرین کی تعداد 10اور 15رہی ہے‘‘۔انہوں نے کہا کہ اگر ہمیں وائرس کی تیسری لہر سے بچنا ہے تو لوگوں کو شادی اور دیگر سماجی تقریبات کے علاوہ عام زندگی میں بھی ایس او پیز پر عمل کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا ’’ میں ضلع مجسٹریٹ کی حیثیت سے یہ کہنے میں کوئی ہچکچاہٹ محسوس نہیں کر رہا ہوں کہ جموں وکشمیر میں کورونا کی تیسری لہر کی شروعات کی وجہ سرینگر ہی بن سکتا ہیـ‘۔
 
 
 

ملک میں یومیہ کیسز 10,929 | ہلاکتیں392

یو این آئی
نئی دہلی // ملک میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا انفیکشن کے 10929 معاملے سامنے آئے ، جس کے بعد کیسز کی مجموعی تعداد 3 کروڑ 43 لاکھ 44 ہزار 683 ہو گئی ہے ۔ جمعہ کو ملک میں 20 لاکھ 75 ہزار 942 افراد کو کورونا کے ٹیکے لگائے گئے اور اب تک ایک ارب سات کروڑ 92 لاکھ 19 ہزار 546 افراد کو کورونا کے ٹیکے لگائے جاچکے ہیں۔ اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں 12509 مریضوں کے صحت یاب ہونے کے ساتھ ہی اب تک اس وبا کو شکست دینے والے لوگوں کی کل تعداد تین کروڑ 37 لاکھ 37 ہزار 468 ہو گئی ہے ۔ اس وقت ملک میں ایکٹو کیسز کی تعداد 146950 ہے ۔ اسی عرصے میں 392 مریضوں کی موت کے بعد ہلاکتوں کی تعداد چار لاکھ 60 ہزار 265 ہو گئی ہے ۔