شوپیان کے کنبے کی انتظامیہ سے اپیل | کیرن جھڑپ میں جاں بحق جنگجو کی میت سپرد کی جائے

سرینگر//کیرن کپواڑہ جھڑپ میں جاں بحق ہوئے جنگجو کی نعش کی سپردگی کا مطالبہ کرتے ہوئے شوپیان کے کنبے نے ایک مرتبہ پھر ضلع انتظامیہ سے اپیل کی کہ اُنہیںاُن کے بیٹے کی نعش فراہم کی جائے تاکہ وہ اپنے لخت جگر کی تجہیزو تکفین ادا کر سکے ۔ سی این آئی کے مطابق شوپیان کے دارمدور علاقے سے تعلق رکھنے والے ایک کنبے نے بدھ کو ایک مرتبہ پھر احتجاج کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ کیرن کپواڑہ جھڑپ میں جاں بحق ہوئے ان کے لخت جگر کی نعش اُن کے سپردکی جائے ۔انہوں نے بتایا کہ جھڑپ میں ان کا لخت جگر سجاد احمد ہرا جاں بحق ہو ا ۔ اس موقعہ پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے سجاد احمد ہرا کی بہن نے کہا کہ ان کا بھائی دو سال قبل دلی روانہ ہونے کے بعد لاپتہ ہو گیا اور آج تک اُنہیں اس کے بارے میں کوئی علمیت نہیں تھی ۔ انہوں نے بتایا کہ کیرن سیکٹر میں گزشتہ دنوں جھڑپ کے دوران پانچ جنگجوئوں کی ہلاکت کے بعد کئی افراد نے ان کے گھر آکر یہ کہہ دیا کہ ان کا بھائی جھڑپ میں جاں بحق ہو گیا ۔ انہوں نے ضلع انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ ہمارے بھائی کی نعش ہمارے سپرد کی جائے تاکہ ہم ان کی تجہیز و تکفین آبائی مقبرے میںکر سکے ۔ اس موقعہ پر مہلوک جنگجو کے ایک اور قریبی رشتہ دار نے بھی بتایا کہ انہیں ذرائع سے خبر ملی کہ ان کا بیٹا کیرن کپواڑہ جھڑپ میں جاں بحق ہو گیا جس کے بعد انہوں نے کپوارہ انتظامیہ سے مطالبہ کیا تھا کہ ان کے لخت جگر کی نعش انہیں سپرد کی جائے تاکہ وہ ان کی تجہیز و تکفین کر سکے تاہم ابھی تک ایسا نہیں کیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ ہم ایک بار پھر انتظامیہ سے اپیل کرتے ہیں کہ ان کے لخت جگر کی نعش انہیں فراہم کی جائے تاکہ وہ اُس کی تجہیز و تکفین کر سکیں ۔