شمالی کمان سربراہ کا پہلا دورہ وادی اختتام پذیر | فا ئر بندی مفاہمت کے اچھے نتائج سامنے آئے: جنرل دویدی

سرینگر//شمالی فوج کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل اپیندر دویدی آج اپنے تین روزہ کشمیر کے دورے کا اختتام کریں گے۔ یکم فروری 2022 کو ادھم پور میں واقع شمالی آرمی کمانڈ کی باوقار کمان سنبھالنے کے بعد دویدی کا چنار کور کا یہ پہلا دورہ ہے۔آرمی کمانڈر کے سفر کے پروگرام کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے، دفاعی ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ وہ 14 فروری 2022 کو چنار کور ہیڈ کوارٹر پہنچے تھے۔ دورے پر آئے افسر کو لیفٹیننٹ جنرل ڈی پی پانڈے، جی او سی چنار کور نے موجودہ سیکورٹی صورتحال اور دشمن عناصر کا مقابلہ کرنے کے اقدامات کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔ انہوں نے چنار کور کے سینئر افسران کے ساتھ بات چیت کی اور لائن آف کنٹرول کے ساتھ مضبوط  انسداد دراندازی گرڈکی تعریف کی۔ترجمان نے کہا"انہوں نے ہندوستان اور پاکستان دونوں کے ڈی جی ایم اوز کے درمیان سیز فائر مفاہمت کی پاسداری کے ذریعہ استعمال کیے گئے سخت کنٹرول کی بھی تعریف کی، جو 25 فروری 2022 کو ایک سال مکمل کرے گا‘‘۔انہوں نے کہا کہ فوج آپریشنز کے دوران عوامی املاک کو کم سے کم ہونے کو یقینی بناتے ہیں،اور عوام کیساتھ رابطے رکھنے کے نتیجے میں [عسکریت پسند] بھرتیوں میں مجموعی طور پر کمی آئی ہے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ "جنرل نے سی آر پی ایف کے 40 جوانوں کو بھی خراج عقیدت پیش کیا جنہوں نے تین سال قبل اس دن قافلے پر حملے کے دوران قربانی دی تھی۔آرمی کمانڈر نے مختلف سول کارکنوں اور سول سوسائٹی کے اراکین سے بات چیت کی۔ انہوں نے کشمیر میں پائیدار امن اور ترقی کے لیے تمام ایجنسیوں کی جانب سے اٹھائے جانے والے تیز رفتار اقدامات کو سراہا۔ انہوں نے سیکورٹی فورسز اور سول انتظامیہ کے تمام عناصر کے درمیان ہم آہنگی کی تعریف کی۔لیفٹیننٹ جنرل دویدی نے شمالی کشمیر میں لائن آف کنٹرول پر اگلی چوکیوں کا بھی دورہ کیا۔