شراب کے نشے میں دُھت درجہ چہارم ملازم کیخلاف احتجاج

بانہال // تحصیل کھڑی کے باوا ، منگت میں قائم ڈسپنسری میں تعینات محکمہ صحت کے ایک درجہ چہارم ملازم کو دیگر چند افراد کے ہمراہ شراب کے نشے میں پانے کے بعد لوگوں نے احتجاج کیا ہے اور ڈسپنسری کو بند کرنے کے بعد معاملہ چیف میڈیکل افسر رام بن کو نوٹس میں لایا ہے ۔سی ایم او نے بلاک میڈیکل افسر بانہال کو اس کی تحقیقات اور کارروائی کا حکم صادر کئے ہیں۔ کھڑی کی گوجر بستی پر مشتمل آبادی کا کہنا ہے کہ یہاں قائم ڈسپنسری میں تعینات ایک ملازم کئی دوسرے افراد کے ہمراہ شراب کے نشے میں دھت پڑے تھے اور وہاں سے خواتین کا گزرنا محال ہوگیا ہے ۔ غلام حسین گوجر نامی ایک شہری نے بتایا کہ ڈسپنسری کو تالہ بند کیا گیا ہے اور اس سلسلے میں چیف میڈیکل افسر رام بن ڈاکٹر سیف الدین خان کے پاس شکایت درج کی گئی اور انہوں نے سخت کارروائی کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت کے درجہ چہارم ملازم کی اس حرکت سے لوگوں میں عدم اطمینان اور عدم تحفظ پیدا ہوا ہے اور مرد و خواتین کیلئے وہاں سے نکلنا مشکل ہوگیا ہے۔ انہوں نے مذکورہ ملازم کو یہاں سے تبدیل کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے حکام سے سخت کارروائی کا مطالبہ کیا ہے تاکہ سماج میں  ایسے عناصر کو پنپنے نہ دیا جائے اور انکی حوصلہ شکنی کی جائے ۔رابطہ کرنے پر چیف میڈیکل افسر رام بن ڈاکٹر سیف الدین خان نے بتایا کہ بلاک میڈیکل افسر بانہال کو اس واقع کی انکوائری اور کارروائی کرنے کا حکم دیا گیا ہے اور چند روز میں مکمل رپورٹ انہیں پیش کی جائے گی ۔