شجر کاری مہم :امسال ا علیٰ معیار کے 2لاکھ پودے لگائے جائینگے

سرینگر //موسم بہار کی آمد کے ساتھ ہی گائوں دیہات میں جہاں شجرکاری مہم کا اغاز ہو رہا ہے ،وہیں محکمہ باغبانی اس سال شجرکاری مہم کے تحت 2لاکھ اعلی معیار کے پودے لگانے جا رہا ہے جس پر کل خرچہ 952کروڑروپے آئے گا ۔محکمہ کے مطابق سال 2017-18میں 80ہزار ہائی ڈینسٹی کے پودے لگائے گئے جن پر 850کروڑروپے کا خرچہ آیا تھا ۔ ذرائع کے مطابق 2018-19میں محکمہ 2لاکھ پودے لگانے کا منصوبہ رکھتا ہے جس پر کل 952کروڑ کا خرچہ آئے گا او ر یہ پودے 4سو ہیکٹر اراضی پر پھیلی 70نرسریوں میں لگائے جائیں گے ۔محکمہ نے بتایا کہ اس وقت محکمہ کے پاس پونے 2لاکھ پودے موجود ہیں، اس کے علاوہ ہائی ڈینسٹی پلانٹ سکیم جسے سال2017میں شروع کیا گیا ہے اُس کے تحت بھی بڑے پیمانے پر اراضی کوکام میں لایا گیا ہے اور اس کے تحت بھی ریاست جموں وکشمیر میں بڑے پیمانے پر شجرکاری ہو رہی ہے اور فروٹ گروورس کو ہر ممکن سہولیات بھی محکمہ کی جانب سے فراہم کی جاتی ہیں۔محکمہ کے مطابق ریاست جموں وکشمیر میں لگائے گئے پودوں کی کل تعداد  8کروڑ ہے جس میں سے 6کروڑ پودے کشمیر وادی میں موجود ہیں ۔محکمہ کے ڈائریکٹر اعجاز احمد بٹ نے ’کشمیر عظمیٰ‘ کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ رواں سال بڑے پیمانے پر شجرکاری مہم کا آغاز کر رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ میوہ باغات کو نئی جہت بخشنے کیلئے ہائی ڈینسٹی پلانٹیشن کو متعارف کیاگیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں میوہ درختوں کو آبپاشی کی سہولیات فراہم کرنے کیلئے بھور ویل ، ٹیوب ویل اور واٹر ہارویسٹنگ ٹینک تعمیر کی جا رہی ہیں۔ اس کے علاوہ پیکنگ ہاوسز کو بھی ترقی دی جا رہی ہے تا کہ باغبانی کی فصل کو سائنسی بنیادوں پر تیار کیا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں کو ٹریکٹر ، ٹلر اور موٹر پاور سپرئیریر بھی فراہم کئے جاتے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ محکمہ اخروٹ کی پلانٹیشن مہم ،زائوورہ سرینگر میں 12مارچ کو شروع کرنے جا رہا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ محکمہ اگلے 2برسوں میں 5لاکھ اعلیٰ معیار کے سیب کے درخت لگانے کا منصوبہ رکھتا ہے ۔یہ درخت اے سی ایچ ڈی زین پورہ اور کشمیر وادی میں لگائے جائیں گے ۔