شبِ برات انتہائی عقیدت واحترام کیساتھ منائی گئی

راجوری //راجوری ضلع میں شبِ برات انتہائی عقیدت واحترام کیساتھ منائی گئی ۔ضلع کے مختلف علا قوں کی مساجد میں خصوصی محفلوں کا اہتمام کیا گیا تھا جس کے دوران علماء و اسلامک سکالروں نے شبِ کی مناسبت سے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے لوگوں کو تلقین کی کہ وہ اسلامک تعلیمات کو عام کرنے کیساتھ ساتھ اپنے بچوں کو بھی اس جانب راغب کریں ۔غور طلب ہے کہ اس بار شعبان المعظم کے چاند کی تاریخ میں کافی اختلاف پایا گیا اسی وجہ سے عوام انتشار کا شکار ہیں۔ ہندوستان کے اکثر شہروں بشمول ممبئی ،گجرات راجستھان اجمیر شریف دہلی پنجاب ہریانہ اترپردیش بہار بنگال چھتیس گڑھ کرالہ کرناٹک اور دیگر کئی شہروں کے ساتھ ساتھ جموں کشمیر کے اکثر علاقوں میں بھی 28 مارچ 2021 کو شب برات انتہائی عقیدت و احترام اور مذہبی جوش و خروش سے منائی گئی۔ تمام مساجد میں شب بیداری کا خصوصی اہتمام کیا گیا۔ جہاں پر ملکی سلامتی اور امن عالم کے لئے خصوصی دعائیں مانگی گئیں۔ شب برات کے حوالے سے مساجد میں شب بیداری کے دوران تلاوت کلام الٰہی، حمد و نعت اور درود و سلام کی محافل کا انعقاد کیا گیا۔جبکہ علماء نے شب برات کی اہمیت اور فضیلت ہر بصیرت افروز روشنی ڈالی۔ اس موقع پر عالم اسلام اور خاص طور پر مرکز کے زیر انتظام علاقے جموں و کشمیر کی سلامتی و بقاء کے لئے خصوصی دعائیں مانگی گئیں۔راجوری میں اس سلسلہ میں بڑی تقریب و کانفرنس تالاب والی مسجد راجوری میں منعقد ہوئی جس میں لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی ۔ضلع ترقیاتی کمشنر راجوری ،ڈپٹی انسپکٹر جنرل آف پولیس ،ایس ایس پی راجوری و دیگر آفیسران بھی کانفرنس میں موجود تھے ۔اس سلسلہ میں سیول انتظامیہ تھنہ منڈی ،میونسپل کمیٹی تھنہ منڈی اور مقامی پولیس کی جانب سے بھی اہم انتظامات کئے گئے تاکہ اس مبارک موقع پر عوام الناس کو کسی بھی قسم کی دشواری کا سامنا نہ کرنا پڑے۔اس سلسلہ میں غوثیہ جامع مسجد تھنہ منڈی کے امام و خطیب حافظ محمد نصیر الدین نقشبندی نے کہا کہ بلاشبہ یہ رات مسلمانوں کے لئے بخشش و نجات کی رات ہے۔انھوں نے نبی رحمت صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد نقل کرتے ہوئے کہا کہ بے شک اللہ تعالیٰ شعبان کی پندرہویں رات کو آسمانِ دنیا پر تجلّی فرماتا ہے اور قبیلہ بنی کلب کے بکریوں کے بالوں سے بھی زیادہ گہنگاروں کو بخش دیتا ہے۔انھوں نے کہا کہ شب برات میں اعمال نامے تبدیل ہوتے ہیں اسی لئے حدیث پاک میں ہے کہ جب پندرہ شعبان کی رات آئے تو اس میں قیام کرو اور دن میں روزہ رکھو بے شک اللہ تعالیٰ غروب آفتاب سے آسمان دنیا پر خاص تجلّی فرماتا ہے اور حکم ہوتا ہے ، ہے کوئی مجھ سے مغفرت طلب کرنے والا کہ اسے بخش دوں! ہے کوئی روزی طلب کرنے والا کہ اسے روزی دوں! ہے کوئی مصیبت زدہ کہ اسے عافیت عطا کروں! ہے کوئی ایسا! ہے کوئی ایسا! اور یہ اْس وقت تک فرماتا ہے کہ فجر طلوع ہو جائے۔ دیگر کئی علماء نے بھی شب برات کی مناسبت سے کہا کہ بیشک شَبِ برات نارجہنم سے آزادی کی رات ہے مگر صد افسوس کہ مسلمانوں کی ایک تعداد عبادت و ریاضت کے بجائے آتشبازی یعنی پٹاخے اور گناہ کے کاموں میں ملوث ہو کر اس مقدس رات کے تقدس کو پامال کرتی ہوئی نظرآتی ہے اور یہ بری رسم مسلمانوں میں دن بدن بڑھتی ہی جارہی ہے۔