شبانہ درجہ حرارت میں پھر گراوٹ| ہلکی برفباری کا امکان

سرینگر // وادی کشمیر میں شبانہ درجہ حرارت میں ایک بار پھر اضافہ ہوگیا ہے اور دن کے درجہ حرارت میں بھی گراوٹ ریکارڈ کی گئی۔پیر کی صبح برف کی ہلکی پرت بچھ جانے سے شبانہ درجہ حرارت میں کوئی کمی نہیں آئی جو صرف ایک شب کی راحت کے بعد مزید بڑھ گیا۔پیر اور منگل کی درمیانی شب سرینگر میں درجہ حرارت منفی 4.6ریکارڈ کیا گیا جو اس سے قبل کی رات منفی 3.1تھا۔منگل کو وادی کے شمال و جنوب میں مطلع ابر آلود رہنے سے سردی کی شدت میں اضافہ ہوا۔ شبانہ درجہ حرارت نقطہ انجماد سے مسلسل نیچے درج ہونے سے آبی ذخائر کا جزوی طور منجمد ہونے کا سلسلہ جاری ہے۔ محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ وادی کے بالائی اور میدانی علاقوں میں ہلکے سے درمیانہ درجہ کی برف باری ہو سکتی ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق گرمائی دارلحکومت سرینگر میں سوموار اور منگل کی درمیانی رات کڑاکے کی سردی پڑی اور نہ صرف نل بدسرور جمے رہے بلکہ ڈل جھیل سمیت دیگر آبی ذخائر جزوی طور پر منجمند رہے۔گذشتہ شب قاضی گنڈ میں منفی 4.5ڈگری اور زیادہ سے زیادہ  7.6 ،سیاحتی مقام پہلگام میں منفی 9.3 اور زیادہ سے زیادہ  4.2ڈگری سیلسیش ریکار ڈ کیا گیا ۔ گلمرگ میں کم سے کم درجہ حرارت منفی0 7.ڈگری سیلسیش ریکارڈ کیا گیا جبکہ زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 0.2ڈگری سیلسیش ریکارڈ کیا گیا ۔ کوکرناگ میں منفی 8.4ڈگری اور زیادہ سے زیادہ  5.4ڈگری سیلسیش ریکارڈ کیا گیا ۔سرحدی ضلع کپوارہ میں کم سے کم درجہ حرارت میں بہتری دیکھی گئی اور وہاں کم سے کم درجہ حرارت منفی 1.6ڈگری اور زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 4.6 ریکارڈ کیا گیا ۔یاد رہے کہ سر ینگر میں 31 جنوری کی شب رواں سیزن کی سرد ترین رات درج ہوئی تھی جب کم سے کم درجہ حرارت منفی 8.8 ڈگری ریکارڈ ہوا تھا جس سے سردیوں کا تیس سالہ پرانا ریکارڈ ٹوٹ گیا تھا۔ ادھر محکمہ موسمیات کے ڈائریکٹر سونم لوٹس کے مطابق منگل اور بدھ کی درمیانی رات وادی میںبرف باری کا ایک اور مرحلہ شروع ہونے کا امکان ہے،جو آج دن بھر جاری رہے گا۔انہوں نے کہا کہ آج وادی میں ہلکی سے درمیانہ درجہ کی برف باری ہو گی جبکہ جموں میں بارشیں ہو سکتی ہیں ۔انہوں نے کہا کہ برف باری کے نتیجے میں رات کے کم سے کم درجہ حرارت میں بہتری کی اُمید ہے ۔