شاہراہ پر 3گھنٹے تک ٹریفک بند | سمرولی میں ڈرائیور جاں بحق،مغل روڑ بحال نہ ہوسکا

 با نہال+کنگن// سرینگر جموں شاہراہ پر اتوار کو بھی یک طرفہ ٹریفک کی آمد رفت جاری رہی تاہم سہ پہر کے بعد پسیاں گر آنے سے ٹریفک میں خلل پڑا۔ ادھر مغل روڑپر ساتویں روز بھی ٹریفک کی آمد رفت بند رہی۔ لداخ شاہرا ہ دوسرے روز بھی یکطرفہ طور بحال رہی۔ اتوار کو سرینگر جموں شاہراہ پر یک طرفہ ٹریفک کی نقل و حمل جاری رہی ، اور گاڑیوں کو جموں سے سرینگر آنے کی اجازت دی گئی ۔ محکمہ ٹریفک کے مطابق ساڑھے 4بجے  کے قریب رام بن کے ترشول موڈ پر فور لین شاہراہ کی کشادگی کے دوران ایک پہاڑی ہی کھسک کر شاہراہ پر آگئی جس کے دوران کئی مسافر گاڑیوں میں سوار لوگ بال بال بچ گئے۔ 3گھنٹے تک ٹریفک کی روانی میں خلل پڑا جس کے دوران تعمیراتی کمپنی نے بھاری مشینری کا استعمال کر کے شاہراہ پر پتھر صاف کرنے کا آغاز کیا اور قریب 7بجے تک یہ کام مکمل کیا۔ اسکے بعد ٹریفک دوبارہ بحال کیا گیا۔دریں اثناء سمرولی ادہمپور کے نزدیک سنیچر اور اتوار کی درمیانی شب ایک ٹرک کو حادثہ پیش آیا جس کے نتیجے میں اسکا ڈرائیور لقمہ اجل بن گیا۔ایک مال بردار ٹرک زیر نمبرJK02AQ/7757 سمرولی کے نزدیک سڑک سے لڑھک کر کھائی میں گر گیا جس کے نتیجے میں ٹرک ڈرائیور سبزار احمد تیلی ولد عبدالعزیز تیلی ساکن حسن پورہ بجبہاڑہ جاں بحق ہوا۔ادھر مغل روڑ پر اتوار کو ساتویں روز بھی ٹریفک کی نقل و حمل بند رہی ۔ شاہراہ پر دونوں جانب ٹریفک بند کردیا گیا ہے۔پیر کی گلی، دوبجن اور دیگر علاقوں میں حالیہ ایام میں بھاری برفباری ہوئی جس کے باعث شاہراہ بند کردی گئی ہے۔اس دوران اتوار دوسرے روز بھی سونہ مرگ سے لداخ کی طرف درماندہ گاڑیوں کو روانہ کیا گیا جبکہ گذشتہ روز کپٹن موڈ زوجیلا پر ایک زائلو گاڑی کو برفانی تودہ سے باہر نکال کر کرگل کی جانب روانہ کیا گیا۔ ڈپٹی سپرانٹنڈنٹ رول ٹریفک گاندربل فہیم علی نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اتوار کو سونہ مرگ سے لداخ کی طرف 274درماندہ گاڑیوں کو روانہ کیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ کپٹن موڈ زوجیلا پر جو زائلو گاڑی برفانی تودہ کے نیچے دب گئی تھی، اسے بھی نکالا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ اگر پیر کو موسم صاف رہا تو کرگل اور دراس میں درماندہ گاڑیوں کو سرینگر کی طرف روانہ کیا جائے گا۔