شاہراہ پر لوہے کی ٹنل بھاری پتھروں سے تباہ

بانہال//رام بن اور بانہال سیکٹر میں پہاڑوں کے دامن سے گذرنے والی شاہراہ پر پسیوں اور پتھروں کے گر آنے کی وجہ سے ٹریفک کا متاثر ہونا معمول بنا ہوا ہے اور سنیچر کے روز  پتھروں کے گر آنے کے تازہ سلسلے کی وجہ سے شاہراہ کم ازکم 12 گھنٹوں تک بند رہی۔ شاہراہ کے بند ہونے کی وجہ سے قریب 1000مال بردار گاڑیاں درماندہ ہوئیں۔ ٹریفک حکام نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ سنیچر کی رات قریب2بجے پنتھیال کی پسی سے بچنے کیلئے بنائی گئی لوہے کی عارضی ٹنل پر بھاری پتھر گر آئے جس کی وجہ سے نہ صرف شاہراہ ٹریفک کیلئے بند ہوگئی جبکہ لوہے کی ٹنل کو بھی شدید نقصان ہوا۔ انہوں نے کہا کہ مسلسل گرتے پتھروں کی وجہ سے شاہراہ کی بحالی کا کام کئی بار متاثر ہوتا رہا ۔ تعمیراتی کمپنی کی کئی مشینوں کی مدد سے شاہراہ کو تمام رکاوٹوں سے صاف کیا گیا اور دوپہر بعد دو بجے ٹریفک بحال کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ سینیچر شام تک ایک ہزار کے قریب درماندہ ٹرکوں کو وادی کی طرف نکالا گیا جبکہ مسافر گاڑیوں کو دونوں طرف سے چھوڑ دیا گیا ۔ 
 
 

کشمیر میں موسم خشک

آج شام سے برف وباراں کی پیش گوئی

یو این آئی
سرینگر// محکمہ موسمیات کی طرف سے برف باراں کی ایک اور پیش گوئی کے بیچ وادی کشمیر میں گلمرگ اور پہلگام کو چھوڑ کر شبانہ درجہ حرارت نقطہ انجماد سے اوپر درج ہوا ہے ۔ ترجمان کے مطابق وادی میں اگلے چوبیس گھنٹوں کے دوران موسم ابر آلود رہتے ہوئے بالائی علاقوں میں کہیں کہیں ہلکی بارشیں ہوسکتی ہیں۔ تازہ مغربی ہوائیں جموں وکشمیر میں داخل ہونے والی ہیں جن کے نتیجے میں 6  مارچ کی شام سے7مارچ تک وادی کے میدانی علاقوں میں بارشیں جبکہ بالائی علاقوں میں درمیانی درجے کی برف باری متوقع ہے ۔انہوں نے کہا کہ وادی کے کپوارہ، بارہمولہ، بانڈی پورہ، بڈگام اور گاندربل اضلاع کے بالائی علاقوں میں خراب موسم کے زیادہ اثرات رہ سکتے ہیں۔ان کا
 مزید کہنا تھا کہ بعد ازاں 8 اور 9 مارچ کو بھی موسم خراب ہی رہنے کا امکان ہے ۔ادھر وادی میں گلمرگ اور پہلگام کے بغیر شبانہ درجہ حرارت نقطہ انجماد سے اوپر درج کیا گیا۔سرینگر میں کم سے کم درجہ حرارت 4.0  ریکارڈ کیا گیا ۔ گلمرگ میں منفی5.4  اورپہلگام میں منفی3.4 ڈگری ریکارڈ کیا گیا ۔دریں اثنا وادی میں ہفتے کو بھی صبح سے موسم خشک مگر ابر آلود رہا اور آفتاب اور بادلوں کے درمیان دن بھر آنکھ مچولی جاری رہی۔