شاہراہ پرٹریفک کی 2روزہ پابندی،سیاحت کیلئے نقصان دہ

 
سرینگر// جموں و کشمیر ہوٹلیرس کلب نے شاہراہ پرٹریفک کی 2روزہ پابندی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے گورنر کے صلاح کار سے مطالبہ کیا کہ اس فیصلے پر نظر ثانی کی جائے۔ گورنر کے صلاح کار خورشید احمد گنائی کے ساتھ جمعرات کو ٹی آر سی کے کانفرنس ہال میںٹور آپرٹیروں اور متعلقین کے ساتھ بات چیت میں  ہوٹلیرس کلب کے جنرل سیکرٹری طارق رشید گانی اور سیکرٹری گلمرگ چپٹر آف ہوٹلیرس کلب عاقب چایا نے صلاح کار کو FAMٹور ز جس میں معروف ٹور ایجنٹس اور صحافی شامل ہیں ،کی کامیاب کوششوں کے بارے میں جانکاری دی ۔خورشید گنائی کو جانکاری دی گئی کہ جموں و کشمیر ہوٹلیرس کلب کے چیرمین مشتاق احمد چایا کی سرپرستی میں ممببی میں منعقد کئے گئے ’J&K Tourism Conclave‘جس سے ریاست میں سیاحت کو بڑھاوا دینے کیلئے منعقد کیا گیا ،کے بعد مہاراشٹرا سے 32ٹور آپرٹروں اور 7صحافیوں کے دورہ کشمیر کے بعد کی صورتحال سے آگاہ کیا گیا ۔مشتاق احمد چایا نے ممبی سے آئے وفد کو سرینگر اور گلمرگ میں متعلقین کے ساتھ ملایا اور سیاحت کو بڑھاوا دینے کے حوالے سے اقدامات پر زور دیا ۔ جموں و کشمیر ہوٹلیرس کلب نے ایڈوائزر سے مطالبہ کیا کہ سیاحتی شعبہ کو جی ایس ٹی سے مستثنیٰ رکھا جائے اور brochures کو مختلف علاقائی زبانوں میں رکھا جانا چاہئے تاکہ ملک کے دیہی علاقوں میں لوگوں کو کشمیر آنے میں دلچسپی بڑھ سکے۔ ہوٹلیرس کلب نے ایڈوائزر کو شاہراہ پر ٹریفک پر عائد پابندی کے حوالے سے اپنی تشویش سے آگاہ کیا ۔خورشید گنائی نے موقعہ پر ہی ناظم سیاحت کو ہدایت دی کہ وہ اتوار کے روز سیاحوں کی گاڑیوں کو شاہراہ پر چلنے کیلئے پولیس سے رابطہ کریں ۔انہوں نے یہ یقین بھی دلایا کہ وہ اس معاملے پر گورنر سے بات کریں گے۔ ہوٹلیرس کلب نے جی ایس ٹی کو ختم کرنے کا مطالبہ بھی دہرایا ۔