شالہ ٹینگ بارہمولہ اور اللہ پور ٹنگمرگ میں پانی کی قلت | خواتین نے خالی مٹکے لے کر احتجاج کیا

بارہمولہ+ٹنگمرگ // شالہ  ٹینگ بارہمولہ اور اللہ  پورٹنگمرگ میں پانی کی عدم دستیابی کے خلاف خواتین نے احتجاج کیا۔ شالہ ٹینگ شیری نارواو علاقے میں مقامی لوگوں نے بدھ کو پانی کی عدم دستیابی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔احتجاج میں شامل خواتین اور مردوں نے محکمہ جل شکتی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ علاقے میں گذشتہ تین ماہ سے پانی کی قلت کی وجہ سے ہا ہا کار مچی ہوئی ہے جس کے نتیجے میں مقامی آبادی کو سخت مشکلات کا سامنا ہیں۔مشتا ق احمد نامی ایک شہری نے کشمیرعظمیٰ کو بتایا ہے کہ متعلقہ محکمہ علاقے میں پینے کا صاف پانی فراہم کرنے میں بری طرح سے ناکام ہوچکا ہے جس کے نتیجے میں مقامی آبادی کو سخت مشکلات درپیش ہیں  ۔انہوں نے بتایا کہ اگر چہ لوگوں نے کئی مرتبہ متعلقہ محکمہ کو اس بارے میں مطلع کیا تھا تاہم اس کی طرف کوئی توجہ نہیں دی گئی جسکے باعث لوگ سخت گرمیوں کے ان ایام میں صاف پانی کی ایک ایک بوندکیلئے ترس رہے ہیں ۔اس دوران محکمہ جل شکتی کے جونئیر انجئینر اور شیری پولیس موقعہ پر پہنچے اور لوگوں کو یقین دلایا کہ وہ اس معاملے کو اعلیٰ حکام تک پہنچاکر حل کریں گے  جس کے بعد احتجاجی پُرامن طور منتشر ہوئے ۔ادھر اللہ پور ٹنگمرگ میں محکمہ جل شکتی کے خلاف خواتین نے خالی مٹکے ہاتھوں میں لیکر احتجاج کیا ۔ حلقہ انتخاب گلمرگ کا آخری گاوں اللہ پور ، جو بڈگام ضلع میں پڑتا ہے، محکمہ جل شکتی بڈگام سے منسلک ہے ، میں 75چولہوں کے لئے صرف ایک پبلک پوسٹ دستیاب ہے جو گاوں میں پانی کی ضرورت پوری نہیں کرپاتا ہے۔ تنگ آمد بہ جنگ آمد کے مصداق کے تحت بد وار کو خواتین نے محکمہ جل شکتی بڈگام کے خلاف زور دار احتجاج کرتے ہوئے گاوں کے ہرایک گھر تک سپلائی لائن بچھانے کا مطالبہ کیا ۔احتجاجی خواتین کا کہنا ہے کہ جب سے اللہ پور وجود میں آیا ہے تب سے لیکر آج تک ارباب اقتدار کا مزہ لوٹنے والوں نے اللہ پور کو صاف پانی فراہم کرنے کیلئے جو وعدے کئے وہ سراب ثابت ہوئے ہیں جبکہ آجکل کے زمانے میں بھی خواتین کو کندھوں پر مٹکے لیکر گندے نالے کا پانی حاصل کرنا پڑتا ہے۔ گندہ پانی استعمال کرنے سے گاوں کے لوگ طرح طرح کی بیماریوں میں مبتلا ہوچکے ہیں۔ اللہ پور کے لوگوں نے گورنر انتظامیہ سے فوری طور واٹر سپلائی لائن کی فراہمی کی مانگ کی ہے۔