سیاسی لیڈران کی مخالفت کے باوجود کام کیا

 مینڈھر//کسان مزدور یونین مینڈھر نے اپنی بیس سالہ کارکردگی پیش کرتے ہوئے کہاکہ گزشتہ روز ایک نام نہاد یونین تشکیل دی گئی ہے جس کا ان کی یونین سے کوئی تعلق نہیں ۔ مینڈھر میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مزدور یونین کے جنرل سیکریٹری مشتا ق فا نی نے کہا کہ مقامی سیاسی لیڈران کی مداخلت کے با وجو د تنظیم نے لوگوں کی فلا ح و بہبود کے کام کئے ہیں جن میں 62 در بدر آنگن واڑی ورکروں کی بحالی ،رہبر تعلیم اور ای ویز اساتذہ کی مستقلی کیلئے یاد گار مینڈھرمیں دھرنے دینا،ترقیاتی عمل کی منصوبہ بندی کیلئے دیہی مجلس کا قیام ،ہر سال یوم مئی مناکر محنت کشوں کے مسائل اجاگر کرنا،نریگا اور دیگر ترقیاتی کاموں کی منصوبہ بندی کیلئے دیہی مجلس کی فعالیت ،معذوروں اور بیوائوں کی پنشن لگوانے میں کلیدی کردارقابل ذکرہیں ۔ انہوںنے کہاکہ کسان مزدور یونین نے ہمیشہ حق اور باطل کی لڑائی لڑی ہے اور آئندہ بھی اسی مشن کو جاری رکھا جائے گا۔انہو ں نے کہا کہ گز شتہ روز ایک نا م نہاد یو نین کا قیام عمل میں لایاگیا ہے جس کی وہ مذمت کرتے ہیں اور اس یونین کا ان سے کوئی تعلق نہیں ،یہ یو نین سیا سی مقاصد رکھتی ہے اس کا وابستگی بھی سیاسی جماعت سے ہے ۔انہوںنے کہاکہ اگر کوئی انتشار پسند اس یونین کی مخالفت کرے تو وہ مینڈھر کے تمام کسانوں اور مزدوروں کی مخالفت اور ظلم کو تقویت دینے کاکام انجام دے رہاہے جس کا مقصد ذاتی مفادات کی تکمیل ہوسکتاہے ۔اس موقعہ پریو نین کے صدر عبدالمجید چوہد ری، یونین کے سینئر نائب صدر محمد اعظم آزاد ،نائب صدر محمد شیر ،بلاک صدر ہرنی سفیر احمد خان،محمد شفیق تحصیل صدر منکوٹ،بابو محمد حنیف تحصیل صدر بالاکوٹ، نصیر احمد خان اور محمد اسلم خان بھی موجو دتھے۔