سکیورٹی ایجنسیوں کا غلط بیانیہ مسترد

سرینگر//عوامی اتحاد پارٹی کے سربراہ انجینئر رشید نے نئی دلی پر مسئلہ کشمیر کے حل کی ضرورت سمجھنے کیلئے زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیر کی صورتحال کو ملٹری زاویہ سے دیکھنے کی روش بند کی جانی چاہیئے۔انہوں نے کہا ہے کہ کشمیریوں کو فوجی طاقت کے بل پر قابو میں نہیں رکھا جاسکتا ہے۔پلوامہ،قاضی گنڈ اور بڈگام کے وفود کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے انجینئر رشید نے کہا کہ پولیس اور دیگر سکیورٹی ایجنسیوں کے اعلیٰ افسروں کا ایک طبقہ مارا ماری میں اپنا فائدہ تلاش کرنے کی وجہ سے کشمیر کی صورتحال کو لے کر ایک غلط بیانیہ قائم کرکے نئی دلی کو گمراہ کئے رکھنا چاہتا ہے۔انجینئر رشید نے کہا کہ جنگجو کمانڈر زینت الاسلام کا جنازہ ایک بار پھر نئی دلی کی آنکھیں کھول کر اسے اپنی پالیسیوں پر نظر ثانی کرنے پر آمادہ کرتا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس جنازے میں لوگوں کی کثیر تعداد کی شرکت سے ان عناصر کو بھی ہوش کے ناخن لینا چاہیئے کہ جو جنگجوؤں کے مار گرائے جانے کو اپنی بڑی کامیابی سمجھتے ہوئے اس پر جشن مناتے نہیں تھکتے ہیں۔انجینئر رشید نے مزید کہا کہ کشمیریوں کو سکیورٹی ایجنسیوں کی نصیحتوں کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔تاہم انہوں نے کہا کہ اگر سکیورٹی ایجنسیاں واقعی قیام امن میں دلچسپی رکھتی ہیں تو پھر انہیں نئی دلی کو صاف بتادینا چاہیئے کہ اسکے سچ تسلیم کرنے پر آمادہ نہ ہونے کی وجہ سے ستر سال سے لٹکتے آرہے کشمیر کے سیاسی مسئلے کا کوئی فوجی حل نہیں ہے۔