سکولی بس نے 3 سالہ بچے کو کچل ڈالا

 سرینگر // خانیار علاقے میں کل اُس وقت صف ماتم بچھ گئی جب ایک تیز رفتار اسکول بس نے کمسن بچے کو کچل ڈالا ۔ 3 سالہ کمسن بچہ واصف قیوم ولدعبدالقیوم بٹ ساکنہ نٹی پورہ بڑی بہن کے ساتھ اپنے نانہال خانیارآیاہواتھا۔سوموار کی صبح اسکا ماما بچی کو سکول بس میں چڑھانے کیلئے شیراز چوک پہنچااور ننھا واصف اپنے ماماکی انگلی پکڑ کراس کے ساتھ چل رہا تھا ۔جب بچی منٹوسرکل سکول آلوچی باغ کی بس میں سوار ہوئی تو اسی دوران ڈرائیورنے نہایت لاپرواہی اور تیز رفتاری کے ساتھ گاڑی نکالی جس دوران کمسن بچہ اس کی زد میں آکر شدید زخمی ہو گیا۔ خون میں لت پت کمسن بچے کو اگرچہ نزدیکی ہسپتال پہنچایا گیا تاہم وہاں ڈاکٹروں نے اُسے مردہ قرار دیا ۔اس المناک حادثے کے نتیجے میں علاقہ خانیارمیں غم واندوہ کی لہردوڑگئی اورجب معصوم واصف کی میت کوآبائی گھرواقع نٹی پورہ پہنچائی گئی تووہاں کہرام مچ گیا۔ایس ایچ او خانیار پرویز احمد نے کہا کہ بچہ اپنے نانہال آیا ہوا تھا جس دوران اُس کو بس نے ٹکر مار کر ہلاک کر دیا ۔انہوں نے کہا کہ پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے گاڑی ضبط کر کے ڈرائیور کی گرفتاری عمل میں لائی ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے کیس بھی درج کیا گیا ہے اور پولیس نے تحقیقات شروع کر دی ہے ۔ ادھر بچے کے والد عبدالقیوم نے سکول ڈرائیور کو انتہائی لاپراہ قرار دیتے ہوئے الزام لگایا کہ سکول انتظامیہ کو مذکورہ ڈرائیور کی لاپرواہ ڈرائیورنگ کے بارے میں2بار پہلے ہی اطلاع دی گئی اور انتظامیہ نے یقین دہانی کرائی کہ ڈرائیور بدل دیا جائے گا تاہم ایسا نہیں ہوا ۔