سڑکوں کی عدم دستیابی پر بگا مہور میں احتجاجی مظاہرے

مہور//بگا میں سینکڑوں لوگوں نے مہور گلاب گڑھ سڑک پر احتجاجی دھرنا دیکر سڑک کی عدم دستیابی کے خلاف اپنی برہمی کا اظہارکیا ۔ مظاہرین نے بگا کے مقام پر سڑک بند کردی جس کی وجہ سے مہور گلابگڑھ سڑک پر گاڑیوں کی آمدورفت تقریباً 3 گھنٹوں تک متاثر رہی۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ بلاک گلابگڑھ کے شبراس، بدر، اڑبیس، نہوچ، دیول،ڈوگا،کیدورہ وغیرہ دیہات 21 ویں صدی میں بھی سڑک جیسی سہولت سے محروم ہیں۔انہوں نے کہا کہ سڑک نا ہونے کی وجہ سے ان علاقہ جات کے لوگوں کو طرح طرح کے مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔لوگوں نے کہا کہ وہ اس جدید دور میں بھی راشن اور ضروری اشیائے کاندھوں پر اٹھا کر اپنے گھروں تک پہنچاتے ہیں۔مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ دمنی  سے گلابگڑھ سڑک اور بھل سے شبراس سڑک کا کام تیزی سے کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ دمنی سے گلابگڑھ سڑک 15 سال سے زائد عرصہ سے زیر تعمیر ہے جو ابھی تک مکمل نہیں ہوپائی ہے اور سڑک کا کام بدر کے مقام پر گزشتہ کئی برسوں سے رکا پڑا ہے۔اسی طرح سے بھل سے شبراس سڑک بھی کئی برسوں سے زیر تعمیر ہے جو ابھی تک پایہ تکمیل تک نہیں پہنچی ہے۔لوگوں نے مزیذ کہا کہ اس سڑک کے درمیان ایک پل بھی زیر تعمیر ہے جس کا نام بدناڑ پل ہے، اس کا کام بھی رکا پڑا ہے۔شبراس کے نائب سرپنچ غلام علی نے کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ حادثات کی تازہ مثال یہ بھی ہے کہ گزشتہ دنوں شبراس کا ایک شخص ہسپتال لیجاتے وقت راستے میں ہی دم توڑ بیٹھا۔مظاہرین نے کہا کہ انہوں نے کئی مرتبہ انتظامیہ اور مقامی لیڈران کو اپنی مشکلات سنائیں لیکن کوئی سنوائی نہیں ہوئی۔تین گھنٹوں تک مہور گلابگڑھ سڑک بند رہنے کے بعد پولیس اور انتظامیہ کی ٹیم موقع پر پہنچی اور مظاہرین کو یقین دلایا کہ جلد ہی سڑکوں کا کام شروع کیا جائے گاجسکے بعد لوگوں نے احتجاج ختم کر دیا۔