سپریم کورٹ نے مرکز اور ریاستوں سے جواب طلب کیا

نئی دہلی// سپریم کورٹ نے آج گئورکشکو اور ان سے منسلک جماعتوں پر پابندی عائد کرنے سے متعلق درخواست پر مرکزی حکومت کے علاوہ چھ ریاستوں کو نوٹس جاری کر کے آج پوچھا کہ کیوں نہ گئورکشا کے نام پر تشدد کرنے والی جماعتوں پر پابندی لگا دی جائے ۔ جسٹس دیپک مشرا کی صدارت والی بنچ نے کانگریس لیڈر تحسین پوناوالا اور دو دیگر لوگوں کی درخواست کی سماعت کے دوران مرکزی حکومت کے علاوہ راجستھان، مہاراشٹر، گجرات اور اتر پردیش  سمیت چھ ریاستوں کو نوٹس جاری کر کے تین ہفتے کے اندر اندر جواب داخل کرنے کی ہدایت دی۔ کورٹ نے معاملے کی اگلی سماعت کے لئے تین مئی کی تاریخ مقرر کرتے ہوئے یہ پوچھا ہے کہ کیوں  نہ ان گئورکشکوں اور ان سے منسلک جماعتوں پر پابندی لگا دی جائے ۔درخواست گزار کی جانب سے سینئر وکیل سنجے ہیگڑے نے دلیل دی کہ گایوں کی حفاظت کے نام پر یہ گئورکشک لوگوں پر ظلم کرتے ہیں اور قانون اپنے ہاتھ میں لیتے ہیں۔ انہوں نے گزشتہ دنوں راجستھان کے الور میں ہوئے واقعہ کا ذکر بھی کیا۔ عرضی میں کہا گیا ہے کہ زیادہ ترگئورکشک مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث ہیں، ایسا خود وزیر اعظم نے  بھی کہا تھا لیکن ان پر کوئی کارروائی نہیں ہوئی ۔یو این آئی