سوپور ہسپتال میں نوزائیدہ بچی کی موت

سوپور//سوپورہسپتال میں ڈاکٹروں کی مبینہ لاپرواہی کے باعث ایک نوزائدبچے کی موت واقعہ ہوئی ۔لواحقین نے بچے کی موت کیلئے ڈاکٹروںکو ذمہ دار ٹھہرایا۔عارف حبیب گنائی ساکن کرالہ ٹینگ سوپورنامی شہری نے الزام لگایاکہ اُ ن کی نوزائد بچی سب ڈسٹرکٹ ہسپتال سوپورمیں تعینات ڈاکٹروں کی لاپرواہی کے باعث لقمہ اجل بن گئی ۔انہوںنے بتایا’’میری اہلیہ اپنا علاج سوپور ہسپتال میں تعینات ماہر امراض خواتین سے کرارہی تھیں‘‘ ۔انہوںنے بتایا’’22مئی کوجب میری اہلیہ نے دردکی شکایت کی تومیں نے سوپور ٹراما اسپتال میں تعینات ڈاکٹر کے ساتھ فون پررابطہ کیا لیکن مذکورہ ڈاکٹر نے اُس کوپرائمری ہیلتھ سنٹر تارزو جانے کیلئے کہا‘‘۔انہوںنے الزام لگایا’’ پی ایچ سی تارزومیں تعینات ڈاکٹر کامیری اہلیہ کے تئیں رویہ غیرانسانی تھااسلئے میں نے مجبوراًاپنی اہلیہ کوایک پرائیویٹ ڈاکٹر کے پاس لیا،جس نے ایمرجنسی میں میری اہلیہ کاآپریشن کیا لیکن اس ڈاکٹر نے مجھے بتایاکہ میری اہلیہ کے بطن میں ہی بچے کی موت واقعہ ہوچکی ہے‘‘۔عارف گنائی نے کہا’’ میری نوزائدبچی کی موت کیلئے سوپورہسپتال اورتارزو میںتعینات ماہر امراض خواتین ہیں ،جنہوںنے میری بیوی کابروقت علاج اورآپریشن نہیں کیا‘‘۔عارف گنائی کی شکایت پرسوپورپولیس نے معاملہ درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہے ۔ بلاک میڈیکل افسرسوپورڈاکٹر ذوالفقار کااس سلسلے میںکہناتھاکہ انہیںاس معاملے کی کوئی علمیت نہیں ہے ۔انہوں نے کہاکہ وہ جانکاری حاصل کرکے تحقیقات کروائیں گے۔