سوپور میں فورسز آپریشن کے دوران لشکر کمانڈر سمیت 3 جنگجو جاں بحق

سرینگر//شمالی ضلع بارہمولہ کے سوپور علاقے میں گذشتہ رات کے دوران فورسز آپریشن کے دوران ہوئی معرکہ آرائی میں تین جنگجو جاں بحق ہوگئے۔پولیس نے پیر کو بتایا کہ اس آپریشن کے دوران مارے گئے جنگجوﺅں میں لشکر طیبہ کا ایک اعلیٰ کمانڈر بھی شامل ہے۔
یہ معرکہ آرائی گذشتہ شب کے دوران اُس وقت شروع ہوگئی جب پولیس ،فوج اور سی آر پی ایف نے مشترکہ طور سوپور میں گنڈ براٹھ علاقے کو محاصرے میں لیکر تلاشی آپریشن شروع کیا۔یہ آپریشن پولیس کے مطابق جنگجوﺅں کی موجودگی کی مصدقہ اطلاع کے بعد شروع کیا گیا تھا جس کے دوران چھپے جنگجوﺅں نے فورسز پر گولیاں چلائیں،جواب میں فورسز نے بھی گولیاں چلائیں اور یوں معرکہ آرائی کا آغاز ہوگیا جو آج علی الصبح تک جاری رہا۔
پولیس نے اس بات کی تصدیق کی کہ آپسی گولی باری میں تین جنگجو جاں بحق ہوگئے جن میں مدثر پنڈت نام کا یک لشکر کمانڈر بھی شامل ہے جو پولیس کے مطابق کئی معاملوں میں مطلوب تھا۔
فوج نے مارے گئے تین جنگجوﺅں سے اسلحہ و گولہ بارد بر آمد کرنے کا دعویٰ کیا جس میں تین بندوق بھی شامل ہیں۔
انسپکٹر جنرل آف پولیس وجے کمار نے بھی تین جنگجوﺅں کے مارے جانے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ان میں ایک غیر مقامی جنگجو بھی شامل تھا جو شمالی کشمیر میں2018سے سرگرم تھا ۔انہوں نے مذکورہ جنگجو کی شناخت اسرار عرف عبد اللہ ساکن پاکستان کے طور کی۔
اس آپریشن میں مارے گئے تیسرے جنگجو کی شناخت ہونی ابھی باقی تھی۔