سوپورمیںٹریفک پولیس تعینات کرنے کا مطالبہ | منٹوں کا سفرگھنٹوں میں طے،قصبہ میں ٹریفک جام معمول

سوپور// قصبہ سوپور میں آئے روز ٹریفک جام کے نتیجے میں مسافروں اور راہگیروں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ قصبہ میں پارکنگ سہولیات اور ٹریفک پولیس کی عدم موجودگی کے نتیجے میں ٹریفک جام نے عوام کو گونا گوں مشکلات سے دوچار کردیا ہے جبکہ قصبہ اور اس کے گرد نواح کے علاقوں کی بیشتر سڑکوں کی حالت بھی ناگفتہ بہہ ہے۔قصبہ کے اقبال مارکیٹ، مین چوک، جنرل بس سٹینڈ روڑ، شاہ درگاہ چوک، سنگرامہ چوک، ہاتھی شاہ روڑ اور فروٹ منڈی روڑ پر روزانہ صبح وشام سخت ترین ٹریفک جام دیکھنے کو ملتا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ بدترین ٹریفک جام کے نتیجے میں منٹوں کا سفر گھنٹوں میں طے ہوتا ہے۔ اس بارے میں سوپور کے مقامی باشندے محمد شفیع لرہ نے بتایا کہ قصبے میں تنگ سڑکیں اور غلط پارکنگ بھی ٹریفک جام کا سبب بن جاتا ہے۔ انہوں نے کہا ٹریفک جام کے نتیجے میں ملازمین دیر سے دفاتر پہنچ جاتے ہیں جبکہ بیماروں کو بھی اسپتالوں تک پہنچنے میں کافی وقت لگتا ہے۔اکنامک الائنس سوپور کے صدر حاجی محمد اشرف گنائی نے انتظامیہ کو اس صورتحال کے لئے ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہا کہ انتظامیہ کی عدم توجہی کے نتیجے میں شمالی کشمیر کے اس مصروف ترین قصبہ میں آج تک ٹریفک پولیس کی تعیناتی عمل میں نہیں لائی گئی اور معقول پارکنگ سہولیات بھی قصبہ میں موجود نہیں ہیں جس کے نتیجے میں یہاں ٹریفک جام کا نظارہ روزانہ دیکھنے کو ملتا ہے۔انہوں نے لیفٹینٹ گورنر اور ضلع انتظامیہ سے گزارش کی کہ سوپور میں ٹریفک نظام میں سدھار لایاجائے اور یہاں ترجیحی طور ٹریفک پولیس کی تعیناتی عمل میں لائیںتاکہ لوگوں کو چلنے پھرنے میں راحت ملے۔