سونہ مرگ میں مقامی اسپتال کاوارڈ 3سال قبل برف سے ڈھہ گیا

کنگن//پرائمری ہیلتھ سنٹر سونہ مرگ کی عمارت کے وارڈ کا ایک حصہ 3برس قبل شدید برفباری کی وجہ سے ڈھ گیا لیکن آج تک اس کی مرمت کا کام شروع نہیں کیا گیاہے جس کی وجہ سے اب ہسپتال میں داخل مریضوں کو ایک کمرے میں رکھا گیا ہے۔کشمیر عظمی کو ملی تفصیلات کے مطابق سیاحتی مقام سونہ مرگ میں قائم پرائمری ہیلتھ سنٹر کی عمارت کا وارڈ شدید برفباری کی وجہ سے تین برس قبل ڈھہ گیا جس کی وجہ سے عمارت کے گرنے کا خطرہ لاحق ہے۔ کشمیر عظمی کو باوثوق ذرائع نے بتایا کہ محکمہ صحت نے اگرچہ تین برس قبل محکمہ آر اینڈ بی گاندربل کو ساڑے8 لاکھ روپے پرائمری ہیلتھ سنٹر کی عمارت کو مرمت کرنے کے لئے دیا تھا لیکن تین سال کا عرصہ گزرجانے کے باوجود عمارت کی مرمت تک نہیں کی جارہی ہے۔ ہسپتال ذرائع نے بتایا کہ اگر امسال عمارت کی مرمت نہیں کی گئی توہونے والی برفباری سے عمارت کے گرنے کا خدشہ ہے۔مقامی لوگوں نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ اگرچہ سونہ مرگ اور گگن گیر میں دو بڑے پروجیکٹوںپر کام چل رہا ہے اور اگر کبھی یہاں کوئی بڑا حادثہ رونما ہوا تو اس وقت ہسپتال میں تعینات طبی اور نیم طبی عملے کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ انہوں نے بتایا کہ اگر ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر نے گزشتہ ماہ ہسپتال کا دورہ کیا اور عمارت کی مرمت کے لئے ان کو آگاہ بھی کیا گیا جس کے بعد انہوں نے یقین دلایا تھا کہ ہسپتال کی مرمت کا کام جلد شروع کیا جائے گا لیکن ایک ماہ کا عرصہ گزرنے کو ہوا مگر ابھی تک اس پر کام شروع نہیں کیا گیا ۔