سونہ مرگ میں بلاسٹنگ سے رہائشی مکانوں کو نقصان، معاوضہ نہ دینے کیخلاف لوگوں کا احتجاج

کنگن// وسطی ضلع گاندربل کے شتکڑی سونہ مرگ کے مردو ذن نے جمعرات کے روز این ایچ ڈی سی ایل اور ذیڈ مور ٹنل تعمیراتی کمپنی کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے ۔مظاہرین میں عورتیں، بچے اوربزرگ شامل تھے اور وہ ٹنل میں بلاسٹنگ کی وجہ سے رہائشی مکانوں کو ہوئے نقصان کا معاوضہ نہ ملنے پر سراپا احتجاج تھے۔ 
اُن کا کہنا تھا کہ سال 2017 میں جب ٹنل میں بلاسٹنگ کی جارہی تھی تو اس کی وجہ سے شتکڑی گاو¿ں کے بیشتر رہائشی مکانوں میں ڈراریں پڑگئیں ۔ جون 2018 میں انہوں نے رہائشی مکانوں کو بلاسٹنگ سے ہوئے نقصان کے بارے میں ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل کو مطلع کیا جس کے بعد ضلع ترقیاتی کمشنر نے شتکڑی میں بلاسٹنگ سے رہائشی مکانوں کو ہوئے نقصان کے بارے رپورٹ مرتب کرنے کیلئے ایس ڈی ایم کنگن کی سربراہی میں ایک کمیٹی تشکیل دی۔ اس کمیٹی میں جیالوجی اینڈ مائنگ، آر اینڈ بی، محکمہ مال، سونہ مرگ ڈیولپمنٹ اتھارٹی ایس ڈی پی او کنگن شامل تھے، جنہوں نے شتکڑی سونہ مرگ علاقے میں جاکر رہائشی مکانوں میں بلاسٹنگ سے ہوئے نقصان کا جائزہ لیا۔
 مقامی لوگوں نے بتایا کہ کمیٹی نے رپورٹ پیش کی جس کے بعد ضلع ترقیاتی کمشنر نے این ایچ آئی ڈی سی ایل کو مطلع کیا تاکہ معاوضہ ادا کیا جاسکے۔
 لوگوں کا کہنا تھا کہ تین سال کا عرصہ بھی گذر گیا لیکن این ایچ آئی ڈی سی ایل اور ضلع انتظامیہ نے اس بارے میں کوئی اقدام نہیں کیااور متاثرہ لوگ مسلسل معاوضے سے محروم ہیں۔