سونہ مرگ سے550مسافر گاڑیاں کرگل روانہ

کنگن//غلام نبی رینہ//سونہ مرگ سے آج 550 مسافر گاڑیوں کو کرگل کی طرف روانہ کیا گیا  جبکہ شاہراہ پر کسی بھی مال بردار گاڑی کو لداخ جانے نہیں دیا گیا  جس کی وجہ سے سونہ مرگ میں ایک ہزار کے قریب مال بردار گاڑیاں درماندہ ہیں۔ گذشتہ ہفتہ ہوئی غیر متوقع برفباری کے بعد 434کلو میٹر سرینگر لداخ شاہراہ پر اگرچہ یکطرفہ گاڑیوں کو چلنے کی اجازت ہے لیکن زوجیلا کے مختلف مقامات پر برفباری کی وجہ سے پھسلن پیدا ہونے کے نتیجے میں زوجیلا پر ٹریفک جام کی وجہ سے نہ صرف مال بردار گاڑیوں کے ڈرائیوروں اور مسافروں کو مشکلات کا سامنا ہے بلکہ ٹریفک پولیس کو بھی جام پر قابوپانے کے لئے مشکلات سے گزرنا پڑرہا ہے۔ ٹریفک پولیس ذرائع سے معلوم ہوا کہ اگرچہ اتوار کو کرگل سے سرینگر کی طرف 1500سو گاڑیوں کو روانہ کیا گیا لیکن زوجیلا پر پھسلن کی وجہ سے گیارہ سو گاڑیاں ہی سرینگر کی طرف روانہ ہوسکی جبکہ آج بھی کرگل سے چار سو گاڑیاں سونہ مرگ پہنچ گئی جس کے بعد قریب چار بجے کے بعد سونہ مرگ میں گزشتہ تین روز سے درماندہ 550مسافر گاڑیوں کو کرگل اور لداخ کی طرف روانہ کیا گیا۔ ٹریفک پولیس ذرائع نے بتایا کہ آج بھی کسی مال بردار گاڑی کو لداخ جانے نہیںدیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ سونہ مرگ میں گزشتہ تین روز سے ایک ہزار گاڑیاں جمع ہوگئیں ہیں۔ ٹریفک پولیس کے ایک افسر نے بتایا کہ کلن سے لیکر گگن گیر تک جو گاڑیوں کی قطارلگی تھی ،ان گاڑیوں کو بھی آج سونہ مرگ کی طرف روانہ کیا گیا۔ ذرائع سے معلوم ہوا کہ اس دوران آج اے آر ٹی او گاندربل بشارت منظور نے بھی سونہ مرگ وے برج کا دورہ کرکے ٹریفک کی صوتحال کا جائزہ لیا۔ انہوں نے وہاں پر موجود ایم وی ڈی کے انسپکٹروں کو ہدایت دی کہ دو ملازمین کو ٹرک یارڈ کے باہر رکھا جائے تاکہ وزن کئے بغیر کسی بھی گاڑی کو آگے جانے کی اجازت نہیں دی جانی چاہیئے۔